fbpx

بھارت کے پاکستان کے خلاف مذموم منصوبے، شاہ محمود قریشی نے مودی سرکار کو کیا بے نقاب

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج کی پریس کانفرنس کا چہرہ بھارت کا چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کرنا ہے

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارت کا فاشسٹ چہرہ دنیا پر عیاں ہو چکا ہے،بھارت کی ایل اوسی پر معصوم شہریوں کو نشانہ بنانے کی مذمت کرتاہوں، دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہونے کا دعویٰ اور اپنی حرکتوں سے باز نہیں آتا،

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارت نے پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے،یہ تشویش میرے لئے نئی نہیں، خطے کے امن او استحکام کے لئے ہم خاموش نہیں رہ سکتے، دنیا کو سب بتائیں گے، پاکستان کے دہشت گردی کے خلاف کامیاب آپریشن کو بھارت ہضم نہیں کر پا رہا اسکی منصوبہ بندی واضح ہو چکی ہے

نائن الیون کے بعد دنیا نے دیکھا کہ پاکستان فرنٹ لائن سٹیٹ بن چکا، اور اسکی بڑی قیمت ادا کی گئی، اسکا اعتراف کیا جاتا ہے لیکن جتنا ہونا چاہئے اتنا نہیں، 2001 سے 2020 تک 19 ہزار 130 دہشت گردانہ حملے پاکستانیوں نے سہے ،مقابلہ کیا،32 ہزار شہادتیں ہیں جن میں 23 ہزار عام شہری، بچے خواتین ہیں، 9 ہزار کے قریب پاک فوج کے افسران و جوان شہید ہوئے، اگر مالی نقصان کا جائزہ لیا جائے تو ایک محتاط اندازے کے مطابق پاکستان کو 126 ارب ڈالر سے زیادہ مالی نقصان پہنچا ہے

شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ دنیا جانتی ہے کہ پاکستان مصروف تھا اوردنیا کے امن و استحکام کو حاصل کرنے میں پارٹنر تھا، بھارت پاکستان کے گرد ایک دہشت گرد نیٹ ورک کا جال مسلسل بن رہا تھا، بھارت اپنی سرزمین پاکستان کے خلاف دہشت گردی کے لئے استعمال کرنے کی اجازت دے رہا تھا نہ صرف اپنی سرزمین بلکہ پڑوس میں بھی جہاں جہاں سے جگہ ملی کوشش جاری رکھی، آج ہمارے پاس ناقابل تردید شواہد ہیں اور وہ شواہد ہم قوم کے سامنے اور انٹرنیشنل کمیونٹی کے سامنے رکھیں گے

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ہم نے ڈوزیئر بنایا اس میں تفصیلات بہت ہیں لیکن یہ بھی مکمل نہیں، بھارت کی دہشت گردی کے ناقابل تردید ثبوت ہیں، پچھلے تین چاہ ماہ میں دہشت گردی کو پھر ہوا دینے کی کوشش کی جا رہی ہے، پشاور، کوئٹہ میں دھماکے ہوئے یہ انکے گریںڈ پلان کی عکاسی کرتے ہیں، بھارت کی ایجنسیز پشت پناہی کر رہی ہیں کالعدم تنظیموں کی، ٹی ٹی پی، بی ایل اے، جمعیت الاحرار کی، یہ وہ تنظیمیں ہیں جنکو پاکستان نے شکست دی، آج ان میں پھر روح پھونکنے کی کوشش کی جا رہی ہے، انکو اسلحہ ، آئی ای ڈیز سپلائی کی جا رہی ہیں اور انکو اکسایا جا رہا ہے کہ وہ پاکستان میں کاروائیاں کریں اور علماء کو پولیس آفیشیل کو نشانہ بنائیں

شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ اگست 2020 میں بھارت نے یونفکیشن کی کہ ٹی ٹی پی اور دیگر کالعدم تنظیموں کو یکجا کرنے کی کوشش کی،وہ مسلسل کوشش کر رہے ہیں کہ ان دہشت گرد تنظیموں بی ایل اے، بی ایل ایف اور بی آر ایف کو ایک کیا جائے، یہ بھارت کے گرینڈ ڈیزائن کا حصہ ہے، آئندہ آنے والے مہینوں میں ہماری اطلاعات کے مطابق پاکستان کے اندر دہشت گردی کو بڑھانے کا ارادہ رکھتے ہیں، ایک اطلاع یہ بھی ہے کہ بھارت کی ایجنسیز اور سہولت کاروں کے مابین کم ا زکم چار نشتسیں ہو چکی ہیں وہ پاکستان کے بڑے شہروں کراچی، لاہور ،پشاور پر فوکس کریں گے، ہمارے پاس ناقابل تردید شواہد موجود ہیں کہ را اور ڈی آئی اے جو انکی ایجنسیز ہیں یہ پاکستان کے اندر دہشت گردی کو فنانس کر رہی ہین، دہشت گردی کو پروموٹ کرنے میں عملی اقدام اٹھا رہی ہیں، مقصد دہشت گردی اور پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنا ہے

شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ انکا پہلا ابجیکٹو ہے کہ پاکستان میں امن کی پیشرفت میں خلل ڈالنا ہے، اب امن کی طرف بڑھ رہے ہیں یہ انکو ہضم نہیں ہو رہا، اسکے لئے نیشنل ازم کو ہوا دی جاتی ہے بالخصوص گلگت بلتستان، فاٹا اور بلوچستان میں، انکا دوسرا ابیجکٹو پاکستان معاشی طور پر مستحکم نہ ہو سکے، خوشحالی کی راہ میں رکاوٹ کھڑی کی جا سکے، کس طرح حالیہ جو فیٹف کی میٹنگ تھیں جہاں دنیا پاکستان کے اعتماد کو سراہ رہی تھی وہیں بھارت واحد ملک تھا جو پاکستان کو بلیک لسٹ میں دھکیلنے کی کوشش کر رہا تھا، انکی کوشش ہے کہ افراتفری اور انتشار پیدا کیا جائے جس سے معاشی استحکام ممکن نہ ہو سکے، بھارت دہشت گردی کے لئے 22 ارب تقسیم کر چکا، وہ سی پیک کو سبوتاژ کر رہے ہیں، مصدقہ اطلاعات ہیں کہ انہوں نے ایک سیل بنایا ہے ایجنسیز میں انکا کام ہے کہ سی پیک پروجیکتس کو نشانہ بنانا،یہ سیل وزیراعظم مودی کی سربراہی مین بنایا گیا ہے، اسکا مینڈیٹ تاخیری حربے استعمال کرنا اور سی پیک پروجیکٹ کو نقصان پہنچانا ہے، اسکو اسی ارب روپے دئئے جا چکے ہیں اس مقاصد کے حصول کے لئے، سات سو کی ملیشیا ہائر کی گئی ہے جو ان پروجیکتس کو گاہے بگاہے نشانہ بنائے گی،بھارت کو واضح بتا دینا چاہتا ہوں کہ پاکستان تیار ہے، پاکستان تمام منصوبہ جات، انیجنئرز کی حفاظت کرے گا،

شاہ محمود قریشی کا مزید کہنا تھا کہ بھارت گلگت میں شورش کو ہوا دینا چاہتا ہے وہاں کل الیکشن بھی ہیں، ہمارے پاس اطلاعات ہیں کہ الیکشن کے بعد بھی بھارت کے ارادے نیک نہیں ہیں. دنیا اور انٹرنیشنل کمیونٹی کو علم ہونا چاہئے کہ بھارت 3 انٹرنیشنل کنونشن کی صریحا خلاف ورزی کر رہا ہے، آرٹیکل 2 اینڈ 4، آرٹیکل 41 سب آرٹیکل 3 ،یو این سیکورٹی کونسل کی خلاف ورزی کر رہا ہے.