fbpx

راکھی ساونت نے اپنے خلاف درج ہونے والے فراڈ کے مقدمے کو ایک بڑی سازش قرار دیا

بھارتی متنازع اداکارہ اور بگ باس کے سیزن 14 کی کھلاڑی راکھی ساونت نے اُن کے اور اُن کے بھائی راکیش کے خلاف درج ہونے والے فراڈ کے مقدمے کو ایک بڑی سازش قرار دے دیا-

باغی ٹی وی : بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق دہلی کے وکاص پوری پولیس اسٹیشن میں شائلیش سری واستاوا نامی بینک کے ایک ریٹائرڈ ملازم نے راکھی ساونت اور اُن کے بھائی راکیش کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج کروایا ہے۔

شائلیش سری واستاوا نے ایف آئی آر میں موقف اپنایا کہ اُنہوں نے 2017 میں مشترکہ طور پر راکھی اور اُن کے بھائی کے ساتھ ایک فلم اور ڈانس انسٹی ٹیوٹ بنانے کا فیصلہ کیا تھا جس کے لیے اُنہوں نے راکھی کے بھائی کو 6 لاکھ روپے دیئے تھے۔

اُنہوں نے کہا کہ راکیش نے اُن سے 6 لاکھ روپے کی رقم لی اور اُس کے بدلے اُنہیں 7 لاکھ روپے کا ایک چیک دے دیا جو کہ جعلی دستخط کی وجہ سے باؤنس ہوگیا تھا جس کے بعد اُنہوں نے راکیش سے کئی مرتبہ رابطہ کرنے کی کوشش کی لیکن وہ ٹال مٹول کرتے رہے اور آخر کار اُن کے پیسے کھاگئے۔

تاہم اب بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق راکھی ساونت نے اُن کے اور اُن کے بھائی راکیش کے خلاف درج ہونے والے فراڈ کے مقدمے کو ایک بڑی سازش قرار دے دیا ہے-

راکھی ساونت نے کہا کہ مجھے اس معاملے کا کوئی علم ہے اور نہ ہی میں کسی شائلیش سری واستاوا نامی شخص کو جانتی ہوں یہ میرے خلاف ایک سازش ہے کیونکہ اگر میں نے کسی کے ساتھ 2017 میں فراڈ کیا ہوتا تو وہ اُسی وقت مقدمہ درج کرواتا، اتنے سالوں بعد ایکشن لینے کا خیال کیسے آیا۔

اُنہوں نے کہا کہ ’یہ مقدمہ اُس وقت درج کیا گیا کہ جب میں بگ باس کے سیزن 14 کی مقبول ترین کنٹسٹنٹ بنی اور یہ تمام حالات دیکھ کر تو یہ واضح ہوگیا کہ کوئی میرے خلاف سازش کرنے کی کوشش کررہا ہے۔

سلمان خان کے بعد سہیل خان بھی راکھی ساونت کی مدد کے لئے سامنے آ گئے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.