کل لاکھوں پاکستانی زکوٰۃ کٹوتی سے بچنے کے لیے بینکوں میں‌بیان حلفی جمع کروائیں‌ گے

رمضان سے قبل لاکھوں پاکستانی زکوٰۃ کٹوتی سے بچنے کے لیے بینکوں میں‌بیان حلفی جمع کروائیں‌ گے

باغی ٹی وی :رمضان کی آمد پر ملکی بینکوں میں موجود اکاؤنٹس سے زکوۃ کی کٹوتی کی جاتی ہے . وہ لوگوں جو زکوۃ کٹوتی سے بچنا چاہتے ہیں وہ بینکوں میں بیان حلفی درج کروائیں گے کہ وہ زکوٰۃ ادا کرنے کے اہل نہیں ہیں اور زکوٰ ۃ سے استثنیٰ حاصل کریں گے، ایسے لوگ ہمارے ملک کے اندر لاکھوں کی تعداد میں میں جو زکوٰۃ سے بچنے کے لیے ایسا حربہ استعمال کرتے ہیں.. ان میں بعض لوگ تو ایسے ہونے ہیں. جو اپنے طور پر زکوٰۃ ادار کرنا چاہتے ہیں. جبکہ بیشتر لوگ زکوۃ سے بچنے کا بہانہ تلاش کرتے ہیں.

واضح‌رہے کہ حکومت کی جانب سے رواں برس 1441 ہجری کے لیے زکوٰۃ کا نصاب 46 ہزار 329 روپے مقرر کیا گیا ہے جس کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔

حکومت کے تخفیف غربت اور سماجی تحفظ ڈویژن کی جانب سے اسٹیٹ بینک کو نوٹیفکیشن بھیجا گیا جس کے بعد اسٹیٹ بینک نے بینکوں کو زکوٰۃ کے نصاب سے آگاہ کردیا۔نوٹیفکیشن کے مطابق جن بچت کھاتوں میں 46 ہزار 329 روپے سے زائد رقم ہوگی ان سے ڈھائی فیصد زکوٰۃ کٹوتی ہوگی، پے منٹ اکاؤنٹ، کمپنی اکاؤنٹ یا ڈیکلیریشن اکاؤنٹ سے زکوٰۃ کٹوتی نہیں ہوگی۔نوٹیفکیشن کے مطابق یکم رمضان المبارک سے بینک ازخود زکوٰۃ کی رقم منہا کرنا شروع کردیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال 2019 میں زکوٰۃ کا نصاب 44 ہزار 415 روپے مقرر کیا گیا تھا جو کہ اس وقت 52 تولے چاندی کی مالیت کے برابر رقم تھی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.