رانا ثناءاللہ کی ضمانت کی درخواست، عدالت نے فیصلہ سنا دیا

رانا ثناءاللہ کی ضمانت کی درخواست، عدالت نے فیصلہ سنا دیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق آمدن سے زائد اثاثوں اور منی لانڈرنگ کیس میں رانا ثناءاللہ کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی

رانا ثناءاللہ لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ کے سامنے پیش ہوئے، وکیل رانا ثناء اللہ نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کی دو درخواستیں عدالت کے سامنے ہیں ضمانت کے معاملے پر نیب نے تحریری جواب جواب جمع کرا دیا ہے ۔رانا ثناءاللہ نے نیب کا جو دائرہ اختیار چیلنج کیا نیب نے اسکا جواب نہیں دیا

نیب وکیل نے جواب دیا کہ مارچ 2020 میں ہی جواب جمع کرا دیا تھا ۔ وکیل رانا ثناء اللہ نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کے خلاف پہلے اے این ایف نے جھوٹا کیس بنایا پھر نیب نے کاروائی شروع کر دی ۔اے این ایف نے کہا رانا ثناءاللہ نے تمام جائیداد منشیات بیچ کر بنائی ۔اے این ایف بھی اثاثوں کی چھان بین کر چکا ہے اب نیب نے بھی شروع کر رکھی ہے ۔

نیب وکیل نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کی نیب کے دائرہ اختیار سے متعلق درخواست غیر موثر ہو چکی ہے ۔ لاہور ہائیکورٹ نے نیب کے وکیل کو جواب کی کاپی رانا ثناءاللہ کو فراہم کرنے کا حکم دے دیا لاہور ہائیکورٹ نے رانا ثناءاللہ کی عبوری ضمانت میں دس مارچ تک توسیع کر دی آئندہ سماعت پر فریقین کے وکلا بحث کے لیے طلب کر لئے گئے

مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناء اللہ نے ہائیکورٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم اپنی لیڈر شپ اور جماعت کے ساتھ ڈٹ کر کھڑے ہیں

ملک پر مسلط ٹولا پاگل پن کی حد تک اپوزیشن کے خلاف ہے ،میری جائیدادیں اور اکاونٹ منجمند کیے گئے ہیں،چیئر مین نیب سے کہتا ہوں کہ آپ نے چھ سات ماہ تک ریٹائر ہو جانا ہے،آپکو جو انہوں نے ایکسٹینشن کا جھوٹا لارا لگایا ہوا ہے ایسا نہیں ہو گا، ہماری تحریک کا مقصد سول بالادستی ہے،اگر ظالم حکمران کا راستہ نہ روکا گیا تو انتشار پھیلے گا،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.