نیب پیشی سے قبل رانا ثناء اللہ کے خلاف نیب نے اہم فیصلہ کر لیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق نیب کی لاہورہائیکورٹ میں رانا ثنااللہ کےخلاف درخواست سماعت کے لیے مقرر کر دی گئی ہے

جسٹس سرداراحمد نعیم کی سربراہی میں2رکنی بینچ درخواست پرسماعت کرے گا ،نیب نے 8ماہ بعدرانا ثنااللہ کاکیس مقررکرانے کے لیے ہائیکورٹ میں درخواست دائرکی ،نیب نے آمدن سے زائداثاثوں کے کیس میں راناثنااللہ کو 10 نومبر کوطلب کررکھاہے،رانا ثنااللہ آمدن سےزائداثاثوں کے کیس میں 25 مارچ سےعبوری ضمانت پرہیں

 

،نیب لاہور نے رانا ثنااللہ کو 10نومبر دوپہر 2 بجے طلب کرلیا،نیب کی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم رانا ثنااللہ سے تحقیقات کرے گی ،رانا ثناء اللہ کو نیب کی جانب سے تمام ریکارڈ ساتھ لانے کی ہدایت کی گئی ہے

رانا ثناء اللہ اسے قبل بھی نیب میں پیش ہوتے رہے ہیں،رانا ثنااللہ کے خلاف جاری انکوائری کو انویسٹی گیشن میں تبدیل کرنے کی منظوری دی گئی تھی،رانا ثنااللہ کے خلاف غیر قانونی اثاثہ جات بنانے کے حوالے سے تحقیقات جاری ہیں

،نیب لاہورنے رانا ثنااللہ سے 14 سوالات کے جوابات مانگے،سیاست میں آنے سے قبل اور بعد کے اثاثوں کی تفصیلات طلب کی گئیں،

نیب نے رانا ثناء اللہ سے پوچھا کہ بتایا جائے کہ سیاست کب شروع کی اور کتنی بارپبلک آفس ہولڈ کیا،کیا آپ کےعلاوہ کوئی سیاست میں ہے؟آپ کے کون کون سے کاروبار ہیں؟تفصیلات بتائیں،کیا آپ کےخاندان میں کوئی اور سیاست میں ہے؟آپ ابھی کون سا کاروبار کر رہے ہیں؟آپ اور آپ کی فیملی کے نام کون کون سی جائیدادیں ہیں؟20سال کے دوران کون کون سی جائیدادوں کی خریدوفروخت کی؟

ن لیگی رہنما رانا ثناء اللہ نے نیب طلبی کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست بھی دائر کر رکھی ہے،رانا ثناء اللہ کی جانب سے لاہور ہائکورٹ میں دائردرخواست میں موقف اختیار کیاگیا کہ نیب کی جانب سے تحقیقات کیلئے خلاف قانون طلب کیا گیا ہے،انسداد منشیات اورنیب دونوں ادارے وفاق کے زیرسایہ ہیں،نیب انہیں اثاثوں کی تحقیقات کررہا ہے جواے این ایف عدالت نے منجمد کررکھے ہیں، ایک وقت میں دونوں وفاقی ادارے کیسے تحقیقات کر سکتے ہیں,درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ نیب نے اپنے دائرہ اختیار سے تجاوز کر کے شامل تفتیش کیا ہے، درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ عدالت نیب کی جانب سے طلبی کال اپ نوٹسز کو کالعدم قرار دے

رانا ثناء اللہ کی ضمانت منظور، رانا کی اہلیہ اور ن لیگی رہنماؤں نے بڑے سوالات اٹھا دیئے

رانا ثناء اللہ ایک بار پھرمشکل میں پھنس گئے، حکومت نے اب کیا کیا؟ جان کر ہوں حیران

رانا ثناء اللہ نے سینئر صحافی و اینکر پرسن مبشر لقمان کوجیل سے لکھا خط، کیا کہا؟

رانا ثناء اللہ کی ضمانت، شہر یار آفریدی میدان میں آ گئے، بڑا اعلان کر دیا

واضح رہے کہ منشیات کیس میں رانا ثناء اللہ چھ ماہ کے بعد رہا ہوئے تھے منشیات کیس میں رہائی پانے والے رکن قومی اسمبلی ،مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ اس مقدمے کا کوئی سر اور پاؤں نہیں ہے۔ جن حالات میں مجھے جیل میں رکھا گیا، اس کا ذکر نہیں کروں گا۔ میری چھ ماہ بعد ضمانت ہوئی لیکن پورا انصاف نہیں ہوا۔ جن لوگوں نے جھوٹا مقدمہ درج کرایا اللہ کا قہر اور غضب ان پہ نازل ہو ، اگر میں جھوٹا ہوں تو مجھ پہ اللہ کا قہر اور غضب نازل ہو

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.