راشن کی تقسیم کے دوران پولیس اہلکار کی فائرنگ سے گھر میں کھڑی خاتون جاں بحق

راشن کی تقسیم کے دوران پولیس اہلکار کی فائرنگ سے گھر میں کھڑی خاتون جاں بحق
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کی وجہ سے ملک بھر میں لاک ڈاؤن میں توسیع کر دی گئی ہے، کراچی میں بھی لاک ڈاؤن ہے

لاک ڈاؤن کے دوران فلاحی اداروں، مخیر حضرات کی جانب سے مستحقین میں‌ راشن کی تقسیم کا سلسلہ جاری ہے،اس دوران افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے

کراچی کے علاقے پرانی سبزی منڈی کے قریب راشن کی تقسیم کے دوران دو فلاحی اداروں کے رضاکاروں میں جھگڑے کے دوران مبینہ طور پر پولیس اہلکار کی فائرنگ سے خاتون جاں بحق ہوگئی۔ پی آئی بی میں نشتر بستی پرانی سبزی منڈی کے قریب راشن کی تقسیم کے دوران دو فلاحی اداروں کے رضاکاروں میں جھگڑا ہوگیا۔ جھگڑے کی اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچی۔

علاقہ مکینوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ راشن تقسیم کے دوران مجمع جمع ہونے پر لوگوں کو منتشر کرنے کے لیے پولیس کی جانب سے فائرنگ کی گئی۔ کیونکہ لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کی جا رہی تھی،پولیس اہلکار کی مبینہ فائرنگ سے گھر کی بالکونی میں کھڑی خاتون صبا کو گولی لگی، زخمی خاتون کو نجی ہسپتا ل منتقل کیا گیا تاہم خاتون دم توڑ گئی۔

واقعہ کے بعد مشتعل افراد کی جانب سے پولیس پر پتھرا ئوکیاگیا جس سے پولیس موبائل کا شیشہ ٹوٹ گیا۔پولیس کے مطابق واقعہ کے وقت عظیم سمیت چار اہلکار گشت پر معمور تھے، ہیڈ کانسٹیبل عظیم سمیت چاروں اہلکاروں کو حراست میں لے لیا گیا ، واقعہ کے حوالے سے اہلکاروں سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے اور علاقہ ایس پی تمام اہلکاروں سے انکوائری کر رہے ہیں

واضح رہے کہ سندھ حکومت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ ہم راشن رات کو گھرون‌ میں پہنچا دیتے ہیں جبکہ فلاحی اداروں کو بھی پابند کیا گیا ہے کہ وہ حکومت کے ساتھ ملکر راشن کی تقسیم کریں ، اس ضمن میں حکومت نے ایس او پیز بھی جاری کئے ہیں.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.