قرضوں پر انکوائری کمیشن کا فیصلہ، ریحام خان نے ایسے چھبتے سوال پوچھ لئے کہ ن لیگی خوش ہو گئے

وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے 2008 سے لیکر 2018 تک لئے گئے بیرونی قرضوں سے متعلق انکوائری کمیشن بنانے کا اعلان کئے جانے پر ریحام خان نے ٹویٹر پر چھبتے ہوئے سوال کئے ہیں اور اس فیصلے پر سخت تنقید کی ہے.

وزیر اعظم عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے سوشل میڈیا سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ سابقہ حکومتوں نے جو دس سال میں قرضے لیے ہیں اس پرتو انکوائری کمیشن بنانے کا اعلان کیا گیا ہے مگر جو 10 ماہ میں 3 ہزار ارب روپے سے زیادہ قرضے لیے گئے ان کے لیے انکوائری کمیشن کون بنائے گا؟؟۔ اسی طرح ریحام خان نے اپنی دوسری ٹویٹ‌ میں‌ لکھا ہے کہ "جس پی ٹی وی پر حملہ کیا گیا تھا اس نے بھی کل وزیراعظم سے خوب بدلہ چکایا ہے‘‘.


رپورٹ کے مطابق ریحام خان کی طرف سے اپنے تیسرے ٹویٹ میں لکھا گیا کہ ’’اینکرز کو پہلے میوٹ کیا جاتا ہے، کل تو ملکی تاریخ میں پہلی بار سرکاری ٹی وی پر وزیراعظم کے الفاظ کو بھی میوٹ ہوتے دیکھا ہے، ویسے تو وزیراعظم قول و فعل میں تضاد کے بادشاہ تھے۔مگر کل تو حد ہی ہو گئی ، کل سرکاری ٹی وی میں بھی زبان اور الفاظ ساتھ دے نہیں رہے تھے۔

وزیر اعظم عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان کی طرف سے کی گئی ان ٹویٹس پر مسلم لیگ ن کے کارکنان کی طرف سے سوشل میڈیا پر زبردست خوشی کا اظہار کیا جارہا ہے. یاد رہے کہ وزیر اعظم نواز شریف نے گزشتہ روز اپنے خطاب میں‌ انکوائری کمیشن بنانے کا اعلان کیا اور کہا تھا کہ وہ کسی طور چوروں‌کو نہیں چھوڑیں گے جبکہ آج وزیر اعظم کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں انکوائری کمیشن بنانے سے متعلق امور پر غوروفکر کیا گیا ہے. مسلم لیگ ن نے کمیشن بنائے جانے کی باتوں کو اپوزیشن جماعتوں‌ کو بلیک میل کرنے کے مترادف قرار دیا ہے.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.