fbpx

سینیٹر کامران مرتضیٰ کے دفتر میں ڈکیتی :مجرم 13 دن گزرنے کے باوجود تاحال نہ پکڑے جاسکے

اسلام آباد (محمداویس)سینیٹر کامران مرتضیٰ کے دفتر میں ڈکیتی :مجرم 13 دن گزرنے کے باوجود تاحال نہ پکڑے جاسکے ،اطلاعات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنماء اور معروف ماہر قانون سینیٹر کامران مرتضیٰ کے دفتر میں ڈکیتی کرنے والے مجرم 13 دن گزرنے کے باوجود تاحال نہ پکڑے جاسکے، جس سے اسلام آباد پولیس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان اٹھ گئے،

اس سلسلے میں‌ سینیٹر کامران مرتضیٰ کی اہلیہ اور رکن قومی اسمبلی عالیہ کامران نے اسپیکر قومی اسمبلی کو خط لکھ کر معاملے کی چھان بین اور انکوائری کے لیئے اسلام آباد انتظامیہ کو احکامات جاری کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق 27 اگست کو اسلام آباد میں سینیٹر کامران مرتضیٰ کے دفتر میں چار مسلح افراد نے ڈکیتی کی وارادت کی اور سینیٹر کامران مرتضی کے بیٹے سمیت دیگر افراد کو یرغمال بنا کر نقدی لوٹ کے فرار ہوگئے،

واقعہ کی ایف آئی آرتھانہ کراچی کمپنی میں درج کرائی گئی، لیکن تاحال مجرموں کو نہ پکڑا جا سکا،جے یو آئی (ف) کی رکن قومی اسمبلی عالیہ کامران نے معاملے کے حوالے سے اسپیکر قومی اسمبلی کو خط لکھ دیا،

خط میں کہا گیا ہے کہ حکومت عوام کو مناسب سیکیورٹی فراہم کرنے میں ناکام ہے، امن و امان کی صورتحال ہر گزرتے دن کے ساتھ خراب ہوتی جارہی ہے، خاص طور پر اسلام آباد میں یہ صورتحال بہت بدتر ہے، مجرموں کو پکڑنے اور معاملے کی چھان بین کرنے کے لیئے کوئی عملی کام نہیں کیا گیا،

خط میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ معاملے کی چھان بین اور باقاعدہ انکوائری کے لیئے اسلام آباد انتظامیہ کو فوری اور ضروری احکامات جاری کیئے جائیں۔