fbpx

روس نے پاکستان سے چاول درآمد کرنے پر عائد پابندی اٹھالی

روس نے پاکستان سے چاول درآمد کرنے پر عائد پابندی اٹھالی

کراچی : روس نے پاکستان سے چاول درآمد کرنے پر عائد پابندی 11 جون 2021 سے اٹھا لی۔روس کے پلانٹ پروٹیکشن کے ادارے روزل خوزنادزور نے اپنے خط میں وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی اینڈ ریسرچ کے ماتحت ادارے محکمہ پلانٹ پروٹیکشن کےڈائریکٹر ٹیکنکل محمد سہیل شہزادکو پاکستان سے چاول کی درآمد سے باضابطہ پابندی اٹھانے سے متعلق آگاہ کیا۔

ابتدائی طور پر روسی پلانٹ پروٹیکشن ادارے نے پلانٹ پروٹیکشن کے سفارش کردہ چاول پرو سیسنگ اور برآمد کرنے والے چار یونٹس سے روس میں چاول درآمد کرنے کی اجازت دی ہے۔ جن میں دو کارخانے کراچی میں واقع ہیں اور ایک لاہور اور ایک چنیوٹ میں ہے جب کہ روس نے دیگر چاول پروسس اور برآمد کرنے یونٹس اور برآمد کنندگان سے روس میں چاول کی درآمدان یونٹس کی پاکستانی پلانٹ پروٹیکشن ادارے کی سفارش اور آن لائن معائنہ اور تصدیق سے مشروط کیا ہے۔

روس کے پلانٹ پروٹیکشن کے ادارے نے 16مئی 2019 کو چاول کی ایک کنسائنمنٹ سے کیڑا نکلنے پر پاکستان سے مزید چاول کی درآمد پر پابندی لگادی تھی جس پر وزارت قومی خوراک اور ان کے ماتحت ادارے محکمہ پلانٹ پروٹیکشن پاکستان نے اس معاملہ کی تحقیق کرکے وجوہات معلوم کی اور ان وجوہات کا روس کے ساتھ تبادلہ کیا، مستقبل میں ایسے واقعات سے بچنے کیلئے ایک جامع فائٹو سینٹری رہنمائی پروگرام بنایا اور پھر اس کو چاول پروسیسنگ فیکڑیوں اوریونٹس پر لاگو کردیا۔ پروگرام سے متعلق روس کو بھی آگاہ کیا گیا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.