fbpx

روسی بحری بیڑے پر ڈرون حملہ، فوجیوں سمیت پانچ افراد زخمی

روسی بندرگاہ کریمیا کے علاقے میں ایک بحری بیڑے کو ڈرون حملے سے نشان بنایا گیا ہے جس کے نتیجے میں فوجیوں سمیت پانچ افراد زخمی ہو گئے۔

باغی ٹی وی : روس سے الحاق کردہ شہر کے مئیر میخائل رضا نے کے مطاق یہ حملہ اتوار کے روز کیا گیا ہے اور کریمیا کی بندرگاہ سیباسٹوپول میں ہوا ہے-

جنگی قیدیوں کی ہلاکت کا الزام ، روس کی اقوام متحدہ کو تحقیقات کی دعوت

ادھر یوکرینی قوم پرستوں نے اتوار کی صبح یہ اعلان کیا کہ اتوار کے دن کو روسی بیڑے کی خرابی کے دن کے طور پر منایا جائے کہ بیڑے پر ڈرون حملے میں زخمی ہونے والے پانچ افراد میں فوجیوں کے ساتھ عام شہری بھی زخمی ہوئے ہیں۔

مئیر کے مطابق شہر میں تمام تہواری تقریبات سکیورٹی کی وجہ سے منسوخ کر دی گئی ہیں اور شہریوں سے کہہ دیا گیا ہے کہ اگر ممکن ہو تو وہ اپنے گھروں کے اندر ہی رہیں۔گھروں سے باہر مت نکلیں ۔

واضح رہے روس میں کئی تقریبات متوقع ہیں جن میں روسی بحریہ کی پریڈ بھی ہے جو سینٹ پیٹرز برگ میں طے ہے اس تقریب میں روس کے صدر ولادیمیر پوٹن نے بھی شریک ہونا ہے۔

چین کے بے قابو خلائی راکٹ کا ملبہ سمندر میں گر گیا

دوسری جانب روس نے اقوام متحدہ اور ریڈ کراس کے ماہرین کو جیل میں یوکرین کے درجنوں جنگی قیدیوں کی ہلاکت کےالزام پر تحقیقات کی دعوت دی ہے جمعرات کی رات روس کے زیر قبضہ یوکرین کے صوبہ ڈونیٹسک کی جیل پر میزائل حملے کے بعد روس اور یوکرین ایک دوسرے پر قیدیوں کی ہلاکتوں کے الزام عائد کر رہے ہیں جس کے بعد روس کی وزارت دفاع کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وہ بامقصد تحقیقات کے لیے اقوام متحدہ اور ریڈ کراس کے ماہرین کو دعوت دے رہی ہے-

روسی وزیر دفاع نے الزام عائد کیا تھا کہ روس کے زیر قبضہ صوبہ ڈونیسک کی جیل میں بند یوکرینی جنگی قیدیوں پر حملہ یوکرین نے امریکہ کی جانب سے سپلائی کیے گئے میزائلوں سے کیا ہے۔

دوسری جانب یوکرینی صدر ولادیمیر زیلنسکی نے میزائل حملے کا ذمہ دار روس کو ٹھہرایا ہےان کا کہنا ہے کہ روس نے جان بوجھ کر جنگی جرم کا ارتکاب کیا اور یوکرینی فوجیوں کا اجتماعی قتل کیا۔

پوپ فرانسس نے عہدہ چھوڑنےکا اشارہ دے دیا