fbpx

سانپ کس نے اور کیوں چھوڑا؟ حلیم عادل نے خود بتا دیا، ایڈیشنل آئی جی کا تحقیقات کا حکم

سانپ کس نے اور کیوں چھوڑا؟ حلیم عادل نے خود بتا دیا، ایڈیشنل آئی جی کا تحقیقات کا حکم
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق انسداد دہشت گردی عدالت نے حلیم عاد ل شیخ کو عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم جاری کر دیا

حلیم عادل شیخ اور دیگر شریک ملزمان کو انسداد دہشتگردی عدالت میں پیش کیا گیا جس دوران پاکستان تحریک انصاف کے رہنما نے موقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ میرے کمرے میں منصوبے کے تحت سانپ چھوڑا گیا ، فاضل جج نے استفسار کیا کہ آپ نے سانپ کے منہ میں دانت دیکھے تھے ؟ حلیم عادل شیخ نے کہا کہ مجھے قتل کرنے کی سازش ہو رہی ہے ، جج نے ریمارکس دیئے کہ آپ سیاسی بیان باہر جا کر دیجیے گا یہاں نہیں ، آپ کو جیل بھیج رہے ہیں وہاں آ پ محفوظ رہیں گے ۔

انسداد دہشتگردی نے حلیم عادل شیخ کو عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم جاری کر دیا اور ملزمان کو 25 فروری کو دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ عدالت نے درخواست ضمانت پر پراسیکیوٹر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 22 فروری کو دلائل طلب کر لیے

عدالت پیشی کے بعد حلیم عادل شیخ نے میڈیا سے مختصر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیکورٹی کو سانپ دکھا کر آیا ہوں، چار فٹ لمبا کالا سانپ چھوڑا گیا، اس سانپ کو میں نے مارا ہے،مراد علی شاہ نے بلاول کے کہنے پر چھوڑا، یہ میرے خلاف سازش ہوئی ہے

دوسری جانب اپوزیشن لیڈر سندھ حلیم عادل شیخ کے کمرے سے زہریلے سانپ کے نکلنے کے معاملے پر ایڈیشنل آئی جی کراچی نے ڈی آئی جی سی آئی اے عارف حنیف سے ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے،ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے عارف حنیف کو معاملے کی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے کہا سانپ کیسے اور کہاں سے نکلا اور حلیم عادل شیخ کے کمرے تک کیسے گیا؟ایڈیشنل آئی جی غلام نبی میمن نے تحقیقات کرکے فوری رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کردی۔

واضح رہے کہ 16 فروری کو کراچی کے سندھ اسمبلی کے حلقے پی ایس 88 ملیر میں ضمنی انتخاب کے دوران حلیم عادل شیخ کو پولیس نے گرفتار کیا تھا۔

دوسری جانب حلیم عادل شیخ کے بعد ان کے ساتھیوں کیخلاف بھی3مقدمات درج کئے گئے، مقدمات میمن گوٹھ تھانے میں سندھ آرمز ایکٹ کی دفعہ 23اے کے تحت درج کیے گئے۔گرفتار ملزمان میں محمود،غلام مصطفی اور رمضان شامل ہیں ، ملزمان کے نام دہشت گردی کےتحت درج ایف آئی آر میں بھی شامل ہیں ، حلیم عادل شیخ کیساتھ گرفتارہونیوالے ساتھیوں سے3ہتھیار ملےتھے، ایف آئی آرکےمطابق گرفتارپرائیوٹ سیکیورٹی اہلکارلائسنس پیش نہ کرسکے پولیس کا کہنا ہے کہ حلیم عادل شیخ کو ایک مقدمےمیں نامزد کیاگیا ہے جبکہ دیگر مقدمات حلیم عادل شیخ کےسیکیورٹی گارڈز کےخلاف درج کیے گئے ہیں

حلیم عادل شیخ کے کمرے سے سانپ نکلنے پر تحریک انصاف نے دیا سخت رد عمل

مقدمے کے متن میں کہا گیا ہے کہ حلیم عادل شیخ اپنے ساتھی سمیرشیخ اور3 سے4مسلح افراد کےساتھ گھوم رہےتھے، ان کےساتھ پولنگ اسٹیشن آنے والوں کےپاس لاٹھیاں بھی تھیں متن میں کہا ہے کہ حلیم عادل شیخ کےساتھ موجود مسلح افراد نے دہشت پھیلانے کےلیےفائرنگ کی، ہوائی فائرنگ سےعلاقے میں خوف وہراس پھیلا،اوربھگڈر مچ گئی، مسلح افراد نےڈیوٹی پر موجود اہلکاروں کوتشدد کانشانہ بنایااور وردیاں پھاڑ دیں مقدمے میں کہا گیا ہے کہ حلیم عادل شیخ کی ہدایت پرپولیس موبائل پرفائرنگ کی گئی،شیشےبھی توڑ دیے گئے، چاروں مقدمات تھانہ میمن گوٹھ کےایس ایچ او خالد عباسی کی مدعیت میں درج کیے

قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ کے کمرے سے سانپ نکلے پر ایم این اے صائمہ ندیم نے کہا کہ حلیم عادل شیخ سے کمرے سے سانپ نکل آنا انتہائی تشویشناک ہے، الگتا ہے دانستہ طور پر حلیم عادل شیخ کے کمرے میں سانپ چھوڑا گیا ہے،ہر طرح سے حلیم عادل شیخ کو زیر کرنے کی سازشیں کی جارہی ہے۔ سپریم کورٹ سندھ پولیس کی انتقامی کارروائیوں پر سوموٹو ایکشن لے۔

پی ٹی آئی رہنما خرم شیر زمان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی اور مراد علی شاہ سے ہمیں جان کا خطرہ ہے، تھر میں بچے بھوک سے کیوں مررہےہیں، حلیم عادل شیخ کیلئے ناگ مراد علی شاہ نے بھیجا تھا، حلیم عادل شیخ نے ناگ مار دیا اور پولیس کو بلاکر دکھایا،

حلیم عادل شیخ کی عدالت پیشی،پراسیکیوٹر کی استدعا مسترد، عدالت نے کیا حکم دیا؟

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.