صبا قمر کی مسجد میں گانے کی شوٹنگ نے کس طرح میری زندگی کی سب سے اہم خوشی چھین لی

صبا قمر کی مسجد میں گانے کی شوٹنگ نے کس طرح میری زندگی کی سب سے اہم خوشی چھین لی ؛ اسسٹنٹ کمشنر لاہور محمد مرتضیٰ

باغی ٹی وی : دو روز قبل سوشل میڈیا پر اداکارہ صبا قمر اور بلال سعید کے گانے کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے گانے کی عکس بندی مسجد وزیرخان میں کی گئی ہے جس میں مسجد کے تقدس کوپامال کیا گیا ہے۔

گلوکار بلال سعید اور اداکارہ صبا قمر کے نئے گانے قبول ہے کی ویڈیو کی مسجد وزیر خان میں شُوٹنگ اور رقص کی ویڈیو کو سوشل میڈیا پر عوام سمیت معروف شخصیات کی طرف سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور فنکاروں کے اس اقدام کی شدید مذمت کی جارہی ہے-

دو روز سے عوام ، مذہبی شخصیات سمیت معروف شخصیات کی جانب سے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے جس کے بعد دونوں فنکاروں نے مسجد میں ویڈیو بنانے کی وضاحت دیتے ہوئےعوام سے معافی بھی مانگی-

تاہم پھر بھی ان فنکاروں کو معاف نہ کرنے اور ان کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا جاتا رہا یہاں تک کہ گذشتہ روز ٹویٹر پینل پر مسجد سینما نہیں ہے ٹرینڈ پر رہا-

تاہم اب اسسٹنٹ کمشنر لاہورمحمد مرتضیٰ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے سلسلہ وار ٹوئٹس میں صبا قمر اور بلال سعید کے اس اقدام پر انہیں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ صبا قمر کی مسجد میں گانے کی شوٹنگ نے کس طرح میری زندگی کی سب سے اہم خوشی چھین لی-

محمد مرتضیٰ نے صبا قمر اور میری سچی خوشیاں عنوان سے سلسلہ وار ٹوئٹس کئے-


محمد مرتضی نے کہا کہ میں صبا قمر کو ذاتی طور پر نہیں جانتا ہوں لیکن صبا قمر اور بلال سعید نے حال ہی میں میری زندگی میں ایک اداس (اور جذباتی طور پر تکلیف دہ) کردار ادا کیا ہے۔ انہیں ابھی تک یہ معلوم نہیں ہے۔ لیکن انہیں معلوم ہونا چاہئے۔
یہ سب 2014 میں شروع ہوا تھا …

مرتضیٰ نے کہا کہ میں نے پرانے لاہور میں وزیر خان مسجد کا دورہ کیا اور مجھے مسجد کے ساتھ محبت ہو گئی مسجد کا محراب ہے ، خوبصورت رنگوں کا مجموعہ ہے اور یہ لاہوریوں ، روایات اور جدید پاکستان کی تاریخ سے گہری وابستگی ہے۔

مرتضیٰ نے لکھا کہ میں نے تب خود سے وعدہ کیا تھا کہ اگر ممکن ہوا تو میں اس مسجد میں اپنی نکاح کروں گا۔

6 سال بعد:ایک عالمی وبائی بیماری نے پاکستانی شادی کی ثقافت کو تبدیل کردیا ہے مجھے فائنل امتحانات کے بعد لاہور میں اسسٹنٹ کمشنر کے طور پر تعینیات کیا گیا ہے اور میں نے شادی کرنے کا فیصلہ کیا- میرے خوابوں کا پہلا اسٹاپ:وزیر خان مسجد

محمد مرتضٰی نے بتایا کہ نکاح کی تاریخ طے پا گئی تھی اتوار کی صبح فجر کے بعد وزیر خان مسجد میں اور رسول اللہ کی سنت کے مطابق ہمارا نکاح ہونا تھا میری ہونے والی بیوی کا لباس تیار تھا میرے بھی کپرے تیار تھےفیملی فوٹوگرافر نے ہر چیز کو مینٹین کر رکھا تا
یہاں تک کہ مہمانوں کو بھی مدعو کرلیا گیا تھا-

مرتضیٰ نے کہا کہ میرا منصوبہ میرا خواب وزیر اعظم مسجد میں صبح سویرے کی شادی جبکہ اس میں آنے والامسئلہ صبا قمر کا مسجد کے ایک محراب میں ٹک ٹاک ویڈیو بناناتھا جس کے نتیجے میں وزیر خان مسجد میں انتظامیہ نے میری نکاح کی اجازت منسوخ کردی ہے-

محمد مرتضی نے مزید کہا کہ میرے نکاح سے ایک ہی دن قبل وہی شخص جس نے مسجد کے اندر ڈانس کی ویڈیو کی اجازت دی تھی مجھے فون کرکے کہا کہ وہ اب مسجد کے اندر کسی بھی چیز کی اجازت نہیں دے سکتا کیونکہ اسےتنازعہ پسند نہیں-

مرتضیٰ نے کہا کہ ان تمام ہفتوں کی محتاط منصوبہ بندی اور سالوں کے خواب دیکھنے کو صرف اس لئے منسوخ کیا جارہا تھا کہ ایک سرکاری نوکر اپنے فرائض کی انجام دہی میں غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کر رہا تھا اور اب غیر منطقی طور پر ہر چیز پر پابندی عائد کرکے روایتی پاکستانی اندازاپنا رہا ہے۔

در حقیقت میں اتنا افسردہ تھا کہ میں نے اپنا نکاح منسوخ کردیا سارے مہمان ، سارے انتظامات ، سارا کھانا ، پھول ، بولی حتی کہ میں نے سب کچھ منسوخ کردیا۔لاؤنج میں ایک ہنگامی خاندانی اجلاس / کانفرنس بلائی گئی۔یہ رویت ہلال کی طرح تھا اور میں اس وقت چوہدری فواد بنا بیٹھاتھا-

آدھی رات کو یہ فیصلہ ہوا کہ نکاح نکاح ہوتاہے وزیر خان مسجد مرکزی ہو یا گھر پر ( لیکن میں اس سے اتفاق نہیں کرتا تھا ، لیکن شادی شدہ زندگی کا پیش خیمہ ہونے کے ناطے ، مجھے نظر انداز کردیا گیا تھا-

محمد مرتضیٰ نے بتایا کہ طویل کہانی مختصر:گذشتہ روز صبح 10:30 بجے ، اتوار 18 ذی الحجہ ۔ 9 اگست ، 2020 ، اسی گھر کا لاؤنج میں ، جس میں مذکورہ ذکر کیا گیا ہے جہاں خاندانی ہنگامی اجلاس ہوا تھا اور میرے نکاح کا فیصلہ کیا گیا تھا، اس میں ہی میں نے کہا کہ تین بار قبول ہے کہا (لڑکی نے ایسا کیا ، جو زیادہ حیران کن ہے) میں اب سرکاری طور پر ایک شادی شدہ آدمی ہوں۔

مرتضیٰ نے بتایا کہ یہاں صبا قمر کے تنازعہ کے افسوسناک معاملے کا میری حسب خواہش شادی پر ہونے والے تباہ کن اثرات کا خاتمہ ہوتا ہے۔ مجھے شاید ہی کبھی ان لوگوں پر اتنا غصہ آیا ہو جن سے میں کبھی نہیں ملا ہوں لیکن وہ وزیر خان مسجد کے انچارج! اللہ پوچھے گا آپکو اور صبا کو بھی شائد-

محمد مرتضیٰ نے اپنی سلسلہ وار ٹویٹس کے آخر مین پیغام دیتے ہوئے لکھا کہ اس خوشی کے موقع پر سرکاری ملازمین کے لئے عوامی خدمت کا پیغام: براہ کرم "ہر چیز پر پابندی عائد کریں” نقطہ نظر کو روکیں۔ یہ حل نہیں ہے۔ ایک گورنمنٹ اور ایڈمنسٹریٹر کی حیثیت سے ہمیں سمجھدار اور منطقی ہونے کی ضرورت ہے۔

کیا روکنا ہے اور کہا نہیں روکنا ہے ؟ جو قانونی اور حلال ہے اسے اجازت دیں-

آخر میں انہوں نے اللہ کا شکر ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہر حال میں اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں-

مسجد میں گانے کے شوٹ کی اجازت کے تیس ہزار روپے لیے گئے ، نوٹیفیکیشن سامنے آ گیا

قبول ہے ایک گانا تھا ان کا اصل نکاح نہیں تھا کہ انہوں نے ایک مشہور مسجد کے مذہبی…

قبول ہے ایک گانا تھا ان کا اصل نکاح نہیں تھا کہ انہوں نے ایک مشہور مسجد کے مذہبی…

صبا قمر کی مسجد وزیرخان میں ڈانس کی ویڈیو وائرل

مسجد میں گانے کی ویڈیو پر صبا قمر نے معافی مانگ لی

مسجد وزیر خان میں ویڈیو پر وضاحت دیتے ہوئے بلال سعید نے معافی مانگ لی

اداکارہ صبا قمر اور بلال سعید کے خلاف مسجد کی بیحرمتی پر تھانہ مزنگ میں مقدمہ کی درخواست دے دی گئی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.