fbpx

بیٹی کے ساتھ منہ کالا کرنے والے سفاک باپ کو عدالت نے سنائی سزا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بیٹی کے ساتھ منہ کالا کرنے والے سفاک باپ کو عدالت نے سزا سنا دی ہے

واقعہ بھارت کا ہے، بھارتی عدالت نے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے ملزم کو 40 برس قید کی سزا سنائی ہے، پولیس کے مطابق ملزم نے اپنی بیٹی کے ساتھ زیادتی کی تھی، ملزم کی بیٹی کم عمر اور نابالغ تھی، واقعہ 2017 کا ہے، بھارتی شہر کیرالہ میں باپ نے اپنی 15 سالہ بیٹی کے ساتھ زیادتی کی جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرتے ہوئے باپ کو گرفتار کر لیا تھا، باپ کی زیادتی کے بعد بیٹی حاملہ ہو گئی تھی،لڑکی کی ماں نے اسقاط حمل کروایا تھا، جب لڑکی حاملہ ہوئی تو سب کو پتہ چلا کہ باپ اپنی بیٹی کے ساتھ منہ کالا کرتا رہا،

اڈوکی فاسٹ ٹریک کورٹ کے جج ٹی جی ورگیس نے کیس کا فیصلہ سنایا، عدالت نے جنسی جرائم سے بچوں کے تحفظ ایکٹ کے تحت ملزم سفاک باپ کو چالیس برس کی سزا سنائی ہے، کیرالہ کے اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر شیجو مون جوزف کا کہنا ہے کہ اس شخص نے ی بیٹی پر اسقاط حمل کے لیے دباؤ بھی ڈالا تھا عدالت نے مجرم پر ایک لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا ہے، عدالت کی جانب سے سزا سنائے جانے کے بعد ملزم کو جیل منتقل کر دیا گیا،

بیوی کی سفاکی، شوہر کو ہتھوڑے کے وار سے قتل کروا کر سر اور ہاتھ بدن سے الگ کر لئے

والد،والدہ،بہن، بھانجے،ساس کو قتل کرنیوالا سفاک ملزم گرفتار

تبادلہ کروانا چاہتے ہو تو بیوی کو ایک رات کیلئے بھیج دو،افسر کا ملازم کو حکم

معذور بچی کے ساتھ زبردستی گھناؤنا کام کرنیوالا ملزم گرفتار

20 سالہ لڑکی کو اغوا کر کے کیا گیا مسلسل دو روز گھناؤنا کام

بچوں سے زیادتی کے مجرموں کوسرعام سزائے موت ،علامہ ساجد میر نے ایسی بات کہہ دی کہ سب حیران

پیار کرنا بن گیا جرم،جوڑے کے گلے میں جوتوں کا ہار ڈال کرلگوایا گیا چکر

شادی کے بعد سسر کرتا رہا نئی نویلی دلہن کے ساتھ مسلسل گھناؤنا کام

قبل ازیں پاکستان کے شہر پنجاب میں بھی ایسا ہی ایک واقعہ پیش آیا تھا، سگی بیٹی کے ساتھ زیادتی کرنے والے سفاک باپ کو عدالت نے سزا سنا ئی تھی ، اپنی سگی بیٹی کے ساتھ 2 سال تک جنسی زیادتی کرنے والے ملزم کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے،اٹھارہ سالہ علیشبا نے حاملہ ہونے کے بعد بچی کو جنم دیا جسکا ڈی این اے ملزم لطیف اور مٹھو سے میچ ہوا مشہور مقدمہ کا ایڈیشنل سیشن جج سجاول خان نے فیصلہ جاری کردیا۔ عدالت نے ایک مرتبہ عمر قید 10 لاکھ وکٹم کے لئیے ہرجانہ ، اور 2 لاکھ روپے سات ماہ کی بچی کے لئے ہرجانہ ادا کرنے کا حکم دے دیا