fbpx

سموگ کے تدارک کے لیے لاہور ہائیکورٹ کا بڑا فیصلہ

سموگ کے تدارک کے لیے لاہور ہائیکورٹ کا بڑا فیصلہ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سموگ کے تدارک کے لیے لاہور ہائیکورٹ کا بڑا فیصلہ ،لاہور ہائیکورٹ نے فصلوں کی باقیات کو جلانے والوں پر 50ہزار روپے جرمانہ عائد کرنے کا حکم دیدیا

جسٹس شاہد کریم نے کہا کہ فصلوں کی باقیات جلانے والوں سے کسی قسم کی رعایت نہ کی جائے ۔چیرمین جوڈیشل ماحولیاتی کمیشن کی رپورٹ ہائیکورٹ میں جمع کرا دی گئی ،4صفحات پر مشتمل رپورٹ سید کمال حیدر نے جسٹس شاہد کریم کی عدالت میں جمع کرائی

فوکل پر سید کمال حیدر نے جسٹس شاہد کریم کی عدالت میں رپورٹ جمع کروائی ،رپورٹ میں عدالت کو بتایا گیا کہ محکمہ تحفظ ماحول نے دھواں پھیلانے والی 104 فیکٹریوں کو سربمہر کر دیا، 120 سٹیل فیکٹریوں کو بھی فضائی آلودگی پیدا کرنے پر سیل کر دیا گیا، دھواں پیدا کرنے والے صنعتی یونٹوں کیخلاف 57 مقدمات درج کروائے گئے،زگ زیگ ٹیکنالوجی کا استعمال نہ کرنے بھٹہ مالکان کیخلاف 13 مقدمات درج کروائے گئے،زگ زیگ ٹیکنالوجی کا استعمال نہ کرنے پر اینٹوں کے 33 بھٹوں کو سیل کر دیا گیا،

جیل حکام خواتین قیدیوں کی عزتیں تارتارکرتے ہیں، پیدا ہونے والے بچوں کوقتل کردیا جاتا ہے،لاہورجیل سے خاتون قیدی کی ویڈیووائرل

سموگ کے تدارک کے لئے لاہور ہائیکورٹ نے حکومت سے کیا پوچھ لیا؟

مغل پورہ کی طرف جائیں آسمان کا رنگ ہی بدل جاتا ہے،لاہور ہائیکورٹ

 

دھواں چھوڑنے والی 6 ہزار 451 گاڑیوں کے چالان کئے گئے اور 35 لاکھ 57 ہزار 250 روپے کے جرمانے عائد کئے گئے،دھواں چھوڑنے والی 978 گاڑیوں کو قبضے میں بھی لیا گیا،ناقص پیٹرول فروخت کرنے پر 49 پیٹرول پمپ مالکان کیخلاف مقدمات درج کروائے گئے،ناقص پیٹرول فروخت کرنے پر 26 افراد کو حراست میں لیا گیا،142 پیٹرول پمپوں پر ایندھن کا معیار چیک گیا گیا، 50 پیٹرول پمپوں پر ایندھن کی ناقص فروخت پائی گئی،شہری علاقوں میں واقع مٹی برتن سازی کی بھٹیوں کو مسمار کیا گیا،انشاط کالونی، والٹن روڈ، کریم بلاک اور جوہر ٹائون میں تجاوزات کیخلاف آپریشن کیا گیا،شہر میں تجاوزات کیخلاف 8 شکایات متعلقہ مجسٹریٹس کو بھجوائی گئیں،