ورلڈ ہیڈر ایڈ

سانحہ بلدیہ، تفتیشی افسر کے بیرون ملک جانے پر پابندی عائد

انسداد دہشتگردی عدالت نے سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس کے تفتیشی افسر اور اہم گواہ کو بیرون ملک جانے پر پابندی لگا دی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق انسداد دہشت گردی عدالت میں سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس کی سماعت ہوئی، دوران سماعت تفتیشی افسر ساجد سدوزئی نے عدالت سے استدعا کی کہ اسپیشل کورس کی غرض سے ایک سال کیلئے امریکہ جانا چاہتا ہوں۔ جانے کی اجازت دی جائے ،جس پر عدالت نے کیس کے اہم گواہ اورتفتیشی افسر ایس پی ساجد سدوزئی کو ملک سے باہر جانے سے روک دیا اور آئی جی سندھ کو ہدایت کی کہ جب تک ساجد سدوزئی کا بیان ریکارڈ نہیں ہوجاتا ان کو ملک سے باہر نہ جانے دیا جائے۔

سماعت کے دوران پراسیکیوٹر نے بھی تفتیشی افسر کے بیرون ملک جانے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ بلدیہ فیکٹری کیس میں مالکان اور تین پولیس افسران کا بیان ریکارڈ ہونا باقی ہے،ساجد سدوزئی کے ملک سے باہر جانے سے بلدیہ کیس کا فیصلہ تاخیر کا شکار ہوسکتا ہے

فیکٹری کے پروڈکشن انچارج نے عدالت میں بیان ریکارڈ کروایا تھا کہ ايم کيو ايم رہنماؤں اور کارکنوں نے بھتہ نہ دينے پر فيکٹری ميں آگ لگائی، فیکٹری مالکان نے بتایا ایم کیو ایم والوں نے 25 کروڑ مانگے۔گواہ نے انکشاف کيا کہ مرکزی ملزم زبير چريا سے فيکٹری مالکان نے کہا کہ ايک کروڑ روپے بھتہ کردو، ملزم زبیر چریا نے کہا 20 کروڑ سے کم نہیں ہوگا، رقم نہ دينے پر ملزم زبير چريا نے فيکٹری مالکان سے کہا سنگين تنائج کا انتظار کریں

واضح رہے کہ کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤن کی ایک گارمنٹس فیکٹری میں 11 ستمبر 2012ء کو آتشزدگی کے نتیجے میں 250 سے زائد افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.