fbpx

سعودی عرب نے میرے بھتیجے کے بارے میں تحقیقات کیں:شیخ رشید

اسلام آباد:عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہےکہ سعودی عرب کی تحقیقات سے ثابت ہوگیا میرا بھتیجا وہاں نہیں تھا، 15 تاریخ کو فیصل آباد جلسہ میں جا کر گرفتاری دینا چاہتا تھا مگر عمران خان نے روک دیا۔

راولپنڈی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ میں تو چاہتا ہوں کہ میرا بھتیجا ایک دو مہینے جیل میں رہے ،اس کی اچھی ٹرینگ ہو جائے گی۔ سعودی عرب کی تحقیقات سے ثابت ہوگیا کہ میرا بھتیجا وہاں نہیں تھا ، اگر ن لیگ کے احسن اقبال ،مریم اورنگزیب یا کوئی بھی کہہ دے کہ راشد وہاں تھا تو میں ذمہ دار ہوں۔

انہوں نے کہا کہ فیصل آبادکی شیطانی چمگادڑنے مدینہ ٹاؤن میں مجھ پرمقدمہ درج کرایا،15 تاریخ کو فیصل آباد جلسہ میں جا کر گرفتاری دینا چاہتا تھا، عمران خان نے منع کر دیا۔ عابدشیرعلی کہتاہےراناثنااللہ پر18قتل کےمقدمےہیں۔ نوازشریف سے جو ملاقاتیں ہو رہی تھیں، میں اور عمران خان ان سے باخبر تھے۔ ہماری حکومت کے خلاف سامراجی پلان بنایا گیا، دو ووٹوں کی اکثریت سے امپورٹڈ حکومت لائی گئی، چودھری سالک اور طارق بشیر چیمہ الگ ہوجائیں تو حکومت ختم ہوجائے گی۔

دوسری طرف رانا ثنااللہ نے حسب روایت اپنی بندوقوں کا رُخ پی ٹی آئی رہنماوں کیطرف کرتے ہوئےکہا ہےکہ مسجد نبوی میں بے حرمتی پر عمران نیازی بلا تاخیر قوم سے معافی مانگیں، ڈیوٹی جج کے کہنے کے باوجود راشد شفیق نے اپنا فون پولیس کو نہیں دیا، یہ عمران اور شیخ رشید کے واقعے میں ملوث ہونے کوتقویت دیتا ہے۔

وزیر داخلہ نے اپنے بیان میں کہا کہ عدالت نے شیخ راشد کے ویڈیو پیغام کی تصدیق کیلئے موبائل فون برآمد کرنے اور فرانزک کاحکم دیا ہے، عدالت کے اصرار کے باوجود شیخ راشد شفیق نے فون پولیس کو نہیں دیا، یہ عمل عمران خان اور شیخ رشید کے واقعے میں ملوث ہونے کوتقویت دیتا ہے۔