fbpx

اسکول کے بعد امریکی یونیورسٹی میں فائرنگ ،1خاتون ہلاک اور 2 افراد زخمی

امریکا میں فائرنگ کے واقعات میں اضافہ، اسکول کے بعد امریکی ریاست لوزیانا کی یونیورسٹی میں فائرنگ کا واقعہ پیش آیا-

باغی ٹی وی : امریکی میڈیا کے مطابق فائرنگ سے خاتون ہلاک اور 2 افراد زخمی ہو گئے، ملزم کو گرفتار کر لیا گیا۔ فائرنگ کا واقع یونیورسٹی کے گریجویشن ہال میں ہوا، جہاں ہائی اسکول کی گریجویشن تقریب جاری تھی۔

کینیڈا میں چھوٹے آتشیں اسلحےکی خرید و فروخت کو مکمل طور پر روکنے کا فیصلہ

حکام نےخبررساں اداروں کوبتایا کہ مردوں کو زخم آئے جو جان لیوا نہیں تھےفائرنگ کا واقعہ لوزیانا کی زیویئر یونیورسٹی کے کانووکیشن سینٹر کے قریب صبح 11:45 بجے کے قریب پیش آیا، جہاں مورس جیف کمیونٹی اسکول نے منگل کی صبح اپنی ہائی اسکول گریجویشن کا انعقاد کیا۔

لوزیانا کے گورنر جان بیل ایڈورڈز نے بتایا کہ یہ فائرنگ دو ہفتے بعد ہوئی جب جنوب مشرقی لوزیانا یونیورسٹی میں ایک اور ہائی اسکول گریجویشن کے باہر فائرنگ میں چار افراد زخمی ہو گئے۔

دوسری جماعت کا طالبعلم اپنے بیگ میں پستول سکول لے آیا، غلطی سے گولی چلنے سے ساتھی…

ایڈورڈز نے کہا، "جو لوگ تشدد کی ان بے ہودہ کارروائیوں کو جاری رکھتے ہیں ان کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا ہمیں اپنی عوام کو محفوظ رکھنے کے لیے مزید کچھ کرنا چاہیے، اور اس کا مطلب ہے کہ ہمیں اس بات کو یقینی بنانے کے لیے مزید کچھ کرنا چاہیے کہ وہ لوگ جو دوسروں کو نقصان پہنچانے کا ناقابل قبول خطرہ رکھتے ہیں آتشیں اسلحہ حاصل کرنے یا رکھنے کے قابل نہیں ہیں۔

وعدہ کرتا ہوں کہ امریکا میں نسل پرستی جیسی برائی کو پنپنے نہیں دوں گا، جوبائیڈن

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے امریکہ کی ریاست ٹیکساس کے ایک پرائمری سکول میں فائرنگ کے واقعے میں 19 بچوں سمیت 21 افراد اس وقت ہلاک ہو گئے تھے جب ایک 18 سالہ مسلح لڑکا سکول کی عمارت میں داخل ہوا اور اندھا دھند فائرنگ کر دی۔

ہلاک ہونے والے 19 طلبا میں دوسری، تیسری اور چوتھی جماعت کے طالبعلم شامل تھیں جن کی عمریں سات سے دس سال کے درمیان تھیں۔ اس واقعے میں سکول کے دو اساتذہ بھی ہلاک ہوئے۔

اس معاملے کی تحقیقات سے منسلک ذرائع نے واشنگٹن پوسٹ کو بتایا کہ شوٹر حال ہی میں 18 سال کا ہوا تھا اور اس کا کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں تھا۔

امریکی ریاست ٹیکساس کے سکول میں فائرنگ،18 کمسن طالبعلم اور ٹیچر سمیت 21 افراد ہلاک