fbpx

سیلاب سے متاثرہ ایک ایک خاندان جلد دوبارہ آباد ہوگا، راجہ بشارت

چیئرمین وزارتی ڈیزاسٹر مینجمنٹ کمیٹی، صوبائی وزیر کوآپریٹوز، تحفظ ماحول و پارلیمانی امور محمد بشارت راجہ نے یقین دلایا ہے کہ سیلاب سے متاثرہ ایک ایک خاندان جلد دوبارہ اپنے گھروں میں آباد ہوگا۔ مکانات کی دوبارہ تعمیر کا کام پانی اترتے ہی شروع کر دیں گے۔ پنجاب حکومت متاثرہ بھائیوں کی امداد کے لئے مالی وسائل میں کمی نہیں آنے دے گی۔

برطانیہ سیلاب زدگان کیلئے مزید ڈیڑھ کروڑ پاؤنڈ امداد دے گا

ڈی جی پی آر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امسال پنجاب میں مجموعی طور پر 364 ملی میٹر بارشیں ہوئیں جو معمول سے 85 فیصد زیادہ تھیں۔ اگرچہ بارشوں سے پہلے فلڈ وارننگ جاری کی گئی تھی اور متعلقہ محکموں نے تیاری بھی کی تھی لیکن اندازے سے کہیں زیادہ بارشوں کے مقابلے میں یہ تیاریاں زیادہ موثر ثابت نہیں ہو سکیں۔

تباہ کن سیلاب سے 30 لاکھ سے زائد پاکستانی بچے خطرات کا شکار

 

محمد بشارت راجہ نے کہا کہ پورے صوبے میں بارشوں اور طغیانی کے نتیجے میں 188 اموات ہوئیں۔ اس کے علاوہ 3 ہزار 256 افراد زخمی ہوئے جبکہ 25 ہزار 315 مکانات کو نقصان پہنچا۔ راجن پور، ڈی جی خان اور میانوالی کے اضلاع میں سب سے زیادہ نقصانات ہوئے۔ انہوں نے بتایا کہ بارشوں اور سیلاب سے 6 لاکھ44 ہزار 339 افراد متاثر ہوئے جبکہ دو لاکھ سے زائد مویشی بھی ہلاک ہوئے۔

صوبائی وزیر نے بتایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہی خود تمام ریلیف سرگرمیوں کی نگرانی کر رہے ہیں۔ سیلاب زدہ علاقوں کو پہلے ہی آفت زدہ قرار دیا جا چکا ہے۔ اس وقت ریلیف کا کام آخری مراحل میں ہے پھر بحالی کا اہم مرحلہ شروع کریں گے۔ محمد بشارت راجہ نے کہا کہ وزیراعلیٰ کی طرف سے متاثرہ افراد کے لئے ریلیف پیکیج منظور کیا گیا ہے۔ ہر جاں بحق فرد کے لواحقین کو دس لاکھ روپے کی امداد دی جائے گی۔ پہلے کچے مکانوں کی تعمیر کے لئے امداد نہیں دی جاتی تھی تاہم اس بار کچے مکانوں کی تعمیرنو کے لئے بھی حکومت امداد مہیا کرے گی۔ متاثرہ علاقوں میں 184 ریلیف کیمپ قائم کئے گئے۔ راجن پور کی 3 تحصیلوں، ڈی جی خان کی 4 تحصیلوں اور میانوالی کی ایک تحصیل میں مجموعی طور پر 33 ہزار 478 خیمے، 4400 تھیلے آٹا، 68 ہزار 637 فوڈ ہیمپرز، 3 ہزار سے زیادہ دیگیں اور ہزاروں پانی کی بوتلیں تقسیم کی جا چکی ہیں۔ڈپٹی کمشنر ڈی جی خان کو 100 ملین، ڈی سی راجن پور کو 80 ملین اور ڈپٹی کمشنر میانوالی کو 65 ملین روپے جاری کئے گئے ہیں۔ مزید بھی جتنی رقم کی ضرورت ہوگی وہ مہیا کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ہمیشہ کی طرح سمندر پار پاکستانی اپنے بھائیوں کی خدمت میں پیش پیش ہیں۔ چند روز پہلے ہونے والی ٹیلی تھون کے دوران چیئرمین عمران خان کی پکار پر چند منٹوں میں کروڑوں کے عطیات جمع ہوئے۔حکومت کے ساتھ فلاحی تنظیمیں بھی اپنے متاثرہ بہن بھائیوں کی امداد میں سرگرم عمل ہیں۔ یہ ایک قومی سانحہ ہے۔ متاثرین سیلاب کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ ان کی ہمت اور جذبے کو سلام کرتے ہیں۔ انشااللہ اس مشکل وقت سے سرخرو ہو کے نکلیں گے۔