fbpx

بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ،شہباز گل کیس کی سماعت ملتوی

بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ،شہباز گل کیس کی سماعت ملتوی

اداروں میں بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ چالان جمع نہ ہونیکی وجہ سے شہباز گل کو عدالت نہ لایا جا سکا

شہباز گل کی ویڈیو لنک کے ذریعے حاضری لگائی گئی شہباز گل کیس کی سماعت جوڈیشل مجسٹریٹ شعیب اختر نے کی عدالت نے پولیس کو آئندہ سماعت تک چالان جمع کرانے کا حکم دے دیا کیس کی مزید سماعت 21 ستمبر تک ملتوی کر دی گئی

قبل ازیں بغاوت پر اکسانے کے الزام میں قید تحریک انصاف کے رہنما شہبازگل کی درخواست اسلام آباد ہائی کورٹ میں سماعت کے لئے مقرر کردی گئی ہے۔ شہباز گل کی درخواست ضمانت پر سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ 9 ستمبر کو کریں گے۔اس حوالے سے اسلام آباد ہائیکورٹ کے رجسٹرار آفس نے کاز لسٹ جاری کردی ہے، اور عدالت نے شہباز گل کی درخواست پر پراسیکوشن سے جواب طلب کر رکھا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل پی ٹی آئی رہنما شہبازگل نے اسلام آباد کی سیشن عدالت میں بھی درخواست ضمانت دی تھی، تاہم عدالت نے اسے مسترد کرکے خارج کردیا تھا۔شہباز گل کے وکیل برہان معظم نےعدالت میں دائر درخواست میں مؤقف پیش کیا تھا کہ اُن کے موکل اپنے بیان کے حوالے سے پیدا ہونے والی کسی بھی غلط فہمی کو دور کرنے کیلئے تیار ہیں۔ وکیل برہان معظم نے اپنے دلائل میں کہا کہ شہباز گل معافی مانگنے کیلئے بھی راضی ہیں لیکن عدالت یہ بھی دیکھے کہ اُن کی گفتگو کے مختلف نکات کو اٹھا کر کس طرح بغاوت کا الزام لگایا گیا۔

نعرے ریاست مدینہ کےاورغلامی امریکہ کی واہ شہبازگل باجوہ

شہباز گل پر ایسا تشدد ہوا جو بتایا جا سکتا اور نہ دکھایا جا سکتا ہے، بابر اعوان

کہا گیا ضمانت ہو گئی،اور عدالت لے آئے، شہباز گل کا بیان

عمران خان نے ووٹ مانگنے کیلئے ایک صاحب کو بھیجا تھا،مرزا مسرور کی ویڈیو پر تحریک انصاف خاموش

شہباز گل کی گرفتاری، پی ٹی آئی کے ڈنڈا بردار کارکن بنی گالہ پہنچ گئے

شہباز گل کی گرفتاری پی ٹی آئی نے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کر لیا

واضح رہے کہ شہباز گل کو عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجا ہے ،شہباز گل نے عدالت پیشی کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انکے ساتھ جنسی زیادتی نہیں ہوئی بلکہ جنسی تشدد ہوا ہے، شہباز گل کو گرفتار کیا گیا تھا تو دو روزہ جسمانی ریمانڈ کے بعد انہیں اگلے ریمانڈ سے قبل ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا تا ہم پولیس نے شہباز گل کے ساتھ چال چلی اور پھر دو روز کا مزید ریمانڈ لے لیا، شہباز گل کے کمرے پر چھاپہ مارا گیا تو وہاں سے پستول برآمد ہوا جس کے بارے میں شہباز گل نے کہا کہ یہ میرا نہیں ہے، پستول کی برآمدگی کا مقدمہ بھی شہباز گل کے خلاف درج کیا جا چکا ہے