ورلڈ ہیڈر ایڈ

شہباز شریف، مولانا فضل الرحمان کی ملاقات، مولانا کی آزادی مارچ میں شرکت کی دعوت

جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف سے ملاقات کی ہے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دونوں‌ رہنماؤں کے مابین یہ ملاقات ماڈل ٹاؤن لاہور میں ہوئی، مسلم لیگ ن کی جانب سے ملاقات میں راجہ ظفر الحق، احسن اقبال، ایاز صادق ،مریم اورنگزیب موجود تھے جبکہ مولانا فضل الرحمان کے ہمراہ پارٹی رہنما اور رہبر کمیٹی کے چیئرمین اکرم درانی اور مولانا امجد خان تھے

دونوں پارٹیوں کے رہنماؤں کے مابین ملاقات میں ملکی موجودہ صورتحال پر غوروخوض کیا گیا،مولانا فضل الرحمان نے لانگ مارچ کو کامیاب بنانے کے لئے ن لیگ سے شمولیت کی درخواست کی جس پر انہیں کہا گیا کہ مسلم لیگ ن پارٹی اجلاس میں 23 ستمبر کو مشاورت کرے گی.

ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے بلاول زرداری کے دھرنے میں شامل نہ ہونے کے بیان پر مایوسی کا اظہار کیا اور ن لیگی وفد سے کہا کہ رہبر کمیٹی پیپلز پارٹی کو دھرنے میں شمولیت کے لئے کہے، اگر بلاول خود نہیں آنا چاہتے تو کم از کم افرادی قوت تو دیں.

 

قبل ازیں گزشتہ روزمولانا فضل الرحمان نے ملتان میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 18 ستمبر کو جمعیت کے اجلاس میں اسلام آباد مارچ کی تاریخ کا اعلان کیا جائیگا، ہماری خواہش ہے کہ سیاسی قائدین ہمارے اسٹیج پر موجود ہوں ،ہر پارٹی کا اپنا اختیار اور اس کی اپنی حکمت عملی ہوتی ہے،آج بھی ہم ان کیساتھ مسلسل رابطے میں ہیں،بیانیے میں کوئی اختلاف نہیں،

مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ ہم رکاوٹیں توڑ کر اسلام آباد جائیں گے، اگرحکومت نے روکنے کی کوشش کی تو پورا ملک جام کر دیں گے۔موجودہ حکومت ناجائز ہے اور ایک سالا کارکردگی کے مطابق نااہل بھی ہے،

حکومت کے گھیراؤ کے لئے مولانا فضل الرحمان نے پھیلائی جھولی

مولانا کا آزادی مارچ، مولانا متحرک، رابطے، ملاقاتیں شروع

مولانا کا آزادی مارچ،ملک کے بڑے سجادہ نشین نے کی حمایت

مولانا فضل الرحمان کا لانگ مارچ، ن لیگ اختلافات کا شکار، اراکین اسمبلی کا نواز شریف کی بات ماننے سے انکار

بلاول نے دیا مولانا فضل الرحمان کو دھوکہ

مولانا فضل الرحمان سے پہلے دے گی پیپلز پارٹی دھرنا.اعلان کر دیا

لانگ مارچ، اپوزیش کا جواب، مولانا نے سجادہ نشینوں سے مانگی مدد

آزادی مارچ، مولانا فضل الرحمان گرفتار ہوئے تو قیادت کون کرے گا؟ اہم خبر

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.