داتا دربار دھماکہ، شہید پولیس اہلکاروں کے اہل خانہ کو پلاٹ دیے جائیں گے. وزیر اعلیٰ پنجاب کا اعلان

وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار سے داتا دربار بم دھماکہ میں شہید ہونے والے پولیس اہلکاروں‌کے اہل خانہ نے ملاقات کی جبکہ اس دوران وزیر اعلیٰ‌ نے کہا کہ شہید پولیس اہلکاروں کے اہلخانہ کو پلاٹ دیئے جائیں گے. اسی طرح یہ بھی کہا گیا کہ لواحقین کو شہید اہلکار کی ریٹائرمنٹ کی مدت ملازمت مکمل ہونے تک پوری تنخواہ بھی ملتی رہے گی۔

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے ملاقات کرنیوالوں میں شہید ہیڈ کانسٹیبل شاہد نذیر، محمد سہیل، شہید کانسٹیبل محمد صدام حسین اور محمد سلیم کے والدین، بیوگان اوربچے شامل تھے۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے شہید پولیس اہلکاروں کے اہلخانہ کوایک ایک کروڑروپے کی مالی امداد کےچیک دیئے. ان کا کہنا تھاکہ شہید اہلکار کی بیوہ، بیٹے یا بیٹی کو سرکاری ملازمت بھی دی جائےگی. یہ بھی کہا گیا کہ شہداء کے اہلخانہ ان کی ریٹائرمنٹ تک سرکاری گھر میں رہ سکیں گے جبکہ لواحقین کو شہید اہلکارکی مدت ملازمت مکمل ہونے تک پوری تنخواہ بھی ملتی رہے گی.

سردار عثمان بزدار کا کہنا تھاکہ شہداء کے بچوں کو فری تعلیم اور صحت کی سہولتیں فراہم کی جائیں گی. وزیراعلیٰ پنجاب داتا دربار بم دھماکہ میں شہید ہونےو الے پولیس اہلکاروں کی عظیم قربانی کو خراج عقیدت پیش کیا اور شہداء کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی و اظہار تعزیت کیا. انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات میں شہید ہونیوالے سویلین کے اہلخانہ کیلئے بھی بجٹ میں‌ امدادی پیکیج کا اعلان کیا جا رہا ہے۔ شہید اہلکاروں کے اہل خانہ ملاقات کے موقع پر اپنے پیاروں‌ کے بچھڑجانے پر رنجیدہ نظر آئے. اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے انہیں حوصلہ دیا اور ان کی دادرسی کی کوشش کی گئی. وزیر اعلیٰ پنجاب نے شہداء کی قربانیوں‌ کو قوم کے ماتھے کا جھومر قرار دیا اور زبردست خراج تحسین پیش کیا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.