fbpx

شارع فیصل کی تزئین کیلئے ماسٹر پلان کی تیاری کا کام آخری مراحل میں ہے،لئیق احمد

ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا ہے کہ شارع فیصل کی تزئین و آرائش کے لئے ماسٹر پلان کی تیاری کا کام آخری مراحل میں ہے، شارع فیصل کراچی کا گیٹ وے اور شہر کی پہچان ہے، ایئرپورٹ روڈ ہونے کی وجہ سے روزانہ لاکھوں افراد یہاں سے گزرتے ہیں، بیرون ملک سے آنے والے سیاحوں اور مہمانوں کا کراچی سے پہلا تعارف بھی اسی شاہراہ کے ذریعے ہوتا ہے لہٰذا اس شاہراہ کی تزئین عالمی معیار کی ہونا چاہئے تاکہ کراچی کے شہریوں کا ایک اچھا اور خوشگوار تاثر قائم ہو، ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز شارع فیصل کی بیوٹیفکیشن کے متعلق اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر سینئر ڈائریکٹر کوآرڈینیشن خالد خان، ڈائریکٹر جنرل ورکس شبیہہ الحسنین زیدی، ڈائریکٹر جنرل پارکس اینڈ ہارٹی کلچر طٰحہ سلیم، سینئر ڈائریکٹر میڈیا مینجمنٹ علی حسن ساجد، سینئر ڈائریکٹر اسٹیٹ امتیاز ابڑو، فیض قدوائی اور دیگر افسران بھی موجود تھے، ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا کہ اب دنیا بھر میں شہروں کی تعمیر کے بعد ان کو سجانے سنوارنے کا عمل جاری ہے اور ترقی یافتہ دنیا میں اسمارٹ سٹیز کا تصور تیزی سے مقبولیت حاصل کر رہا ہے، دنیا کے کئی شہر پہلے ہی انتہائی ترقی یافتہ اور جدید سہولیات سے مزین ہوچکے ہیں جن کی تقلید میں دیگر میٹروپولیٹن شہروں کی انتظامیہ نے بھی جدید طریقوں اور ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کیا ہے اور سڑکوں پر روایتی سائن بورڈز، فٹ پاتھوں، گرین بیلٹ اور آئی لینڈ کو دیدہ زیب شکل دی گئی ہے جبکہ جدید الیکٹرونک اور ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے ذریعے نت نئے انداز اپنائے جارہے ہیں لہٰذا ہمیں ان سب چیزوں کو مدنظر رکھتے ہوئے شارع فیصل اور کراچی کی دیگر اہم اور بڑی شاہراہوں کو ترقی دے کر بہتر بنانا ہے، انہوں نے کہا کہ کراچی کی بیوٹیفکیشن میں تخلیقی عنصر کو پیش نظر رکھا جائے اور اس سلسلے میں مختلف اداروں سے تعاون حاصل کیا جائے، دنیا کے بڑے اور کمرشل شہروں میں سڑکوں اور شاہراہوں کو ریونیو حاصل کرنے کے لئے بھی استعمال کیا جا رہا ہے لیکن ہمیں کمرشل پہلو کے ساتھ ساتھ کراچی کی اہمیت کو اس کے تہذیبی اور ثقافتی پس منظر میں اجاگر کرنا ہے، اس حوالے سے کراچی میں کام کرنے والے اداروں اور عام شہریوں کو بھی اپنے حصے کا کردارا دا کرنا ہوگا، ایڈمنسٹریٹر کراچی نے کہا کہ شارع فیصل کی تزئین اس انداز میں کی جائے جس سے یہ اہم اور مصروف ترین کوریڈور ایک نئی شکل میں ابھر کر سامنے آئے، فٹ پاتھوں کو پیدل چلنے والوں کے لئے کھلا رہنا چاہئے اور اگر کہیں بھی کوئی رکاوٹ یا تجاوزات ہیں تو انہیں فوری ختم کیا جائے تاکہ شہریوں کو سہولت ملے، ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا کہ کراچی اپنی تہذیب و ثقافت کے اعتبار سے ایک قابل فخر ماضی رکھتا ہے، دنیا کے چند بڑے شہروں میں شامل اور ساحلی شہر ہونے کے ناطے اس شہر کی اہمیت بہت زیادہ ہے، اجلاس کے دوران مختلف علاقوں میں سڑکوں ، پلوں اور انڈرپاسز سمیت دیگر بنیادی انفراسٹرکچر کو بہتر بنانے کے کاموں کا بھی جائزہ لیا گیا اور فیصلہ کیا گیا کہ بیوٹیفکیشن کے ساتھ انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کا کام بھی ترجیحی بنیادوں پر جاری رکھا جائے کیونکہ شہریوں کو سہولیا ت کی فراہمی کے لئے سڑکوں، شاہراہوں، پلوں اور انڈرپاسز کو بہتر حالت میں رکھنا ضروری ہے،ایڈمنسٹریٹر کراچی لئیق احمد نے کہا کہ شہر کی بیوٹیفکیشن کے لئے بنائے گئے ماسٹر پلان میں مختلف علاقوں کی ضروریات کو بھی پیش نظر رکھا گیا ہے، موجودہ دور کے تقاضوں کے مطابق تمام امور انجام دیئے جائیں گے جس میں الیکٹرونک اور ڈیجیٹل آلات کا استعمال شامل ہے، بیوٹیفکیشن کے مقاصد تبھی حاصل ہوں گے جب دستیاب انفراسٹرکچر کو کارآمد حالت میں رکھا جائے جس کے لئے محکمہ ورکس کی فیلڈ ٹیمیں کام کر رہی ہیں، انہوں نے کہا کہ کراچی کو خوبصورت اور سرسبز بنانے کے لئے شروع کی گئی شجرکاری مہم کے نتائج بھی جلد سامنے آنا شروع ہوجائیں گے جس سے شہر کے مختلف علاقوں میں واقع بڑی اور اہم سڑکوں اور شاہراہوں کو بہتر اور جدید بنانے میں مدد ملے گی.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.