ورلڈ ہیڈر ایڈ

شریف فیملی کو لاہور ہائیکورٹ نے دیا بڑا جھٹکا

شریف فیملی کو لاہور ہائیکورٹ نے دیا بڑا جھٹکا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق العریبیہ شوگرمل کے اثاثے منجمد کرنے کے خلاف درخواست پر عدالت نے فیصلہ سنا دیا،لاہور ہائیکورٹ نے درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دیا ،لاہور ہائیکورٹ کے دورکنی بینچ نے محفوظ فیصلہ سنایا.

قبل ازیں لاہور ہائیکورٹ نے شریف برادران کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا تھا، شریف برادران کی جانب سے انکے وکیل لاہور ہائیکورٹ میں پیش پوئے تھے، مسٹر جسٹس علی باقر نجفی اور مسٹر جسٹس انوارالحق پنوں پر مشتمل احتساب اپیلٹ بنچ نے درخواست پر سماعت کی ۔درخواست گزار کی طرف سے سابق اٹارنی جنرل آف پاکستان سلیمان اسلم بٹ ایڈووکیٹ پیش ہوئے

سلیمان اسلم بٹ وکیل درخواستگزار نے عدالت میں کہا تھا کہ شریف خاندان کے اس شوگر ملز میں صرف پانچ فیصد حصص ہیں ۔چیرمین نیب ماورائے عدالت کا اختیار استعمال کر رہے ہین

عدالت نے استفسار کیا کہ بادی النظر میں اگر بنک کے شوگر ملز میں 95 فیصد حصص ہیں تو بنک عدالت میں کیوں نہیں آیا ۔دیکھنا ہے کہ نیب کے ڈپٹی ڈائریکٹر ملز کے معاملات چلانے کا قانونی اختیار رکھتے ہیں ۔وکیل درخواستگزار نے کہا کہ نیب کس حیثت میں ملز کے معاملات چلا سکتا ہے۔کمپنی لا اس کی اجازت نہین دیتا ۔

نیب کے وکیل نے کہا کہ چیئرمین نیب اپنے اختیارات ڈی جی کو سونپ سکتے ہیں ،بہتر ہے کہ درخواستگزار احتساب عدالت میں چلنے والے ٹرائل میں تحریری اعتراض کرے .

شریف فیملی نے شوگرمل کے اثاثے منجمند کرنے کا اقدام لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا ،شریف فیملی کی درخواست میں چیئرمین نیب،ڈی جی نیب،تفتیشی افسر اوردیگر کو فریق بنایا گیا ہے،

پانچ کمپنیوں میں 19 کروڑ کی منتقلی،حمزہ شہباز نیب کو مطمئن نہ کر سکے

شہباز شریف کو لائف ٹائم ایوارڈ برائے کرپشن دیا جائے: شہباز گل

حمزہ شہباز کے پروڈکشن آرڈر کے خلاف درخواست دائر

لاہور ہائیکورٹ میں دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ نیب لاہورنے خلاف قانون العریبیہ شوگر مل کے اثاثہ جات کو منجمد کیا،شہبازشریف اورسلمان شہباز سمیت دیگر کےخلاف انکوائری زیر التوا ہے،ڈی جی نیب نے چیئرمین نیب کے اختیارات استعمال کیے جس کی قانون اجازت نہیں دیتا ،اس سے قبل درخواست گزار کےخلاف کوئی بھی ریفرنس یا انکوائری زیرالتوا نہیں

شہباز شریف خاندان کی جائیدادیں اور دو گاڑیاں‌ منجمند کرنے کا حکم، نیب لاہور کا بڑا فیصلہ

شریف فیملی مشکلات کا شکار،شہباز شریف کے بعد کس کی جائیداد ضبط ہونے جا رہی ہے؟

چیئرمین نیب کی کردار کشی کرنیوالی طیبہ گل عدالت پیش، عدالت نے بڑا حکم دے دیا

چیئرمین نیب جاویداقبال کی زیرصدارت ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس

درخواست میں مزید کہا گیا کہ کمپنی کے اثاثہ جات سے شئیر ہولڈر اور ڈائریکٹرز کا کوئی تعلق نہیں ہے،اس معاملے میں کمپنی کی ایک الگ قانونی حیثیت ہے عدالت نیب کا 25 نومبر 2019 کا حکم کالعدم قرار دے،عدالت چیئرمین نیب سمیت دیگرکوکمپنی کےمعاملات میں دخل اندازی سے روکے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.