fbpx

شہبازگل کو پمزاسپتال منتقل کرنے کا حکم

پمز اسپتال سے عدالت جاتے وقت شہباز گل نے منہ پر آکسیجن ماسک لگایا ہوا تھا

سیشن کورٹ اسلام آباد نے شہبازگل کو پمز اسپتال منتقل کرنے کا حکم دے دیا

جوڈیشل مجسٹریٹ نے شہبازگل کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا پر محفوظ فیصلہ سنا دیا عدالت نے شہباز گل کا دوبارہ میڈیکل کرانے کا حکم دے دیا سیشن کو رٹ اسلام آباد نے شہبازگل کو پیر تک پمز اسپتال منتقل کرنے کا حکم دے دیا،جج نے ہدایت کی کہ شہباز گل کی سانس کی تکلیف کا ایک بار پھر جائزہ لیا جائے شہبازگل کی صحت ٹھیک نہیں ،ان کو اسپتال منتقل کیا جائے اگرشہبازگل کی حالت درست ہوتی تو انہیں ایمبولینس میں کیوں لایا جاتا،

قبل ازیں ڈسٹرکٹ سیشن عدالت اسلام آباد میں شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر سماعت ہوئی
ملزم شہباز گل کو ڈسٹرکٹ کورٹ اسلام آباد کے بخشی خانہ پہنچایا گیا ، جج ڈسٹرکٹ سیشن جج نے کہا کہ آج جمعہ ہے کوشش کریں جلدی ہو جائے، وکیل فیصل چودھری نے کہا کہ وکیل شعیب شاہین کا بیٹا آیا ہوا وہ ائیرپورٹ گئے ہیں،جج نے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا شعیب شاہین آدھے گھنٹے تک پہنچ جائینگے؟ وکیل نے کہا کہ شعیب شاہین 9 بجکر 15 منٹ تک پہنچ جائینگے، جج نے نائب کورٹ کو ہدایت کی کہ پولیس کو آگاہ کر دیں ملزم کو سوا 9 بجے پیش کیا جائیگا

بعد ازاں دوبارہ سماعت شروع ہوئی تو شہباز گل کو کمرہ دالت پہنچا دیا گیا ، وکیل نے کہا کہ شہبازگل سے مل کر آیا ہوں ان کو آنے میں مشکل ہورہی ہے پولیس ضد کررہی ہے کہ سیڑھیاں چڑھ کر خود آئے ،جس پر عدالت نے کہا کہ ملزم کو تو اوپر لانا پڑے گا،عدالت نے پولیس کو ملزم کو اٹھا کرلانے کی ہدایت کر دی،پولیس نے شہبازگل کے 8 روزہ مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی

عدالت نے شہباز گل سے استفسار کیا کہ آپ عدالت میں رہنا چاہتے ہیں؟ جس پر شہباز گل نے کہا کہ مجھے ماسک دے دیں میں رک جاوں گا،عدالت نے پولیس سے سوال کیا کہ آپ 8روزہ جسمانی ریمانڈ کیوں مانگ رہے ہیں؟ پہلے 2 روزہ جسمانی ریمانڈ ہوا تھا آپ 8دن کی درخواست کیوں لائے ہیں؟کیا پولیس 2 روز میں تفتیش کرسکی یا نہیں ؟کیا پولیس نیا ریمانڈ مانگ رہی ہے یا پہلے کی توسیع چاہتی ہے ؟ کیا تکنیکی طور پر پہلا 2روزہ جسمانی ریمانڈ شروع ہی نہیں ہوا ؟شہبازگل کی بیماری کے باعث 2 روزہ جسمانی ریمانڈ شروع ہوا ہی نہیں ،وکیل فیصل چودھری نے کہا کہ شہبازگل کی بیماری آپ نے دیکھ لی اس کا جینون ایشو ہے ،میڈیکل رپورٹ سے لگ رہاہے شہبا زگل پر تشدد کیا گیا ڈاکٹر زکا کہنا ہے کوئی درد کی شکایت کرے تو وہ انگلیاں دیکھ کر اندازہ لگاتے ہیں،جو پرچہ ریمانڈ دیاگیا اس کے مطابق بھی پولیس ما ن رہی ہے کہ ریمانڈ مکمل ہوچکا،

وکیل فیصل چودھری نے ہائیکورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس گزشتہ روز کا آرڈر عدالت میں پڑھ کرسنایا ،وکیل نے کہا کہ پراسیکیوشن نے پیر تک شورٹی دی تھی کہ شہباز گل کو سپتال میں رکھیں گے،جج نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ جو ایڈیشنل سیشن جج کا آرڈر تھا میں نے اس کو دیکھنا ہے ، شہباز گل نے عدالت میں کہا کہ میری اصل رپورٹ وہ نہیں جو انہوں نے پیش کی ہیں، عدالت اصل منگوائے شہباز گل کے وکیل نے پولیس کی جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی مخالفت کردی پولیس پراسیکیوٹر کی جانب سے شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر دلائل دیئے گئے، پولیس پراسیکیوٹر نے کہا کہ قانون میں نہیں لکھا کہ بیمار شخص کا ریمانڈ نہیں لیا جاسکتا،کسی بھی ملزم کی جان قیمتی ہوتی ہے، تفتیشی افسر مکمل خیال رکھتا ہے وکیل نے کہا کہ پراسیکیوشن نے پیر تک شورٹی دی تھی کہ شہباز گل کو اسپتال میں رکھیں گے ،رضوان عباسی نے کہا کہ جیل ڈاکٹر نے کہا کہ ملزم ہمارے پاس آیا تو اس کو کوئی مسئلہ نہیں تھا اور رپورٹ نارمل تھی، وکیل فیصل چودھری نے کہا کہ جیل ڈاکٹر نے ایسی کوئی بات نہیں کی ، پراسیکیوٹر رضوان عباسی نے وکیل فیصل چودھری سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بات کر لینے دیں، ایسا نہ کریں،جس پر جج نے کہا کہ آپ بات جاری رکھیں، آپ جواب بعد میں دیں،رضوان عباسی نے عدالت میں کہا کہ جیل ڈاکٹر نے بتایا کہ شہباز گل کو مسئلہ اس وقت ہوا جب جسمانی ریمانڈ پر دینے کا فیصلہ کیا ،وکیل فیصل چودھری نے کہا کہ شہباز گل کے پھیپھڑوں سے متعلق میڈیکل رپورٹ پیش نہیں کی گئی اگر آپ اجازت دیں تو شہباز گل کی میڈیکل ہسٹری بھی عدالت کے سامنے پیش کر سکتے ہیں ،اس میں مقدمہ اخراج کے نوٹس ہوئے ہوئے ہیں اس صورت حال میں بھی ریمانڈ نہیں دیا جا سکتا ،

قبل ازیں تحریک انصاف کے رہنما شہباز گل کو انتہائی سخت سکیورٹی میں پمز اسپتال سے کچہری منتقل کر دیا گیا ہے۔اطلاعات کے مطابق اسلام آباد پولیس شہباز گل کو انتہائی سخت سیکیورٹی کے ساتھ پمز اسپتال کے پچھلے دروازے سے روانہ ہوئی ذرائع کے مطابق پمز اسپتال سے عدالت جاتے وقت شہباز گل نے منہ پر آکسیجن ماسک لگایا ہوا تھا اور انہیں وہیل چیئر پر اسلام آباد کچہری منتقل کیا گیا۔

اسلام آباد پولیس کی جانب سے شہباز گل کو ڈیوٹی جج جوڈیشل مجسٹریٹ راجہ فرخ علی خان کی عدالت میں پیش کیا جائے گا، پولیس عدالت سے شہباز گل کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرے گیاسلام آباد کچہری میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے جبکہ کمرہ عدالت کے باہر ایف سی کی نفری بھی پہنچ گئی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز میڈیکل بورڈ نے شہباز گل کو بالکل فٹ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ ان پر کسی قسم کا تشدد نہیں کیا گیا رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ پی ٹی آئی رہنما تندرست،صحت مند اور مکمل فٹ ہیں۔شہباز گل کسی بھی وقت اسپتال سے ڈسچارج ہوسکتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق شہباز گل کے 10مختلف ٹیسٹ کیے گئے جس میں کورونا ٹیسٹ بھی شامل تھا،ان کے تمام ٹیسٹ کلیئر آئے ہیں اس کے علاوہ پی ٹی آئی رہنماکے 6 مختلف ایکسرے بھی کیے گئے، رپورٹ میں کسی قسم کے تشدد کے شواہد بھی نہیں ملے۔

ذرائع کے مطابق فٹ قرار دیئے جانے کے بعد بھی اسلام آباد پولیس شہباز گل کو اسپتال سے تھانے منتقل کرنے کا فیصلہ نہیں کر سکی تھی میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز نے پولیس حکام کو اسپتال میں شہبازگل سے سوال وجواب کرنے سے روکا رکھا تھا ڈاکٹرز کا مؤقف ہے کہ شہباز گل مکمل فٹ ہیں لیکن اسپتال میں ان سے تفتیش نہیں کر سکتے۔

شہباز گل کی لیگل ٹیم بھی پمز اسپتال پہنچی تھی البتہ لیگل ٹیم کے ساتھ ان کے وکیل فیصل چودھری نہیں تھے مز اسپتال پہنچنے والی شہباز گل کی لیگل ٹیم نے کورٹ کا تحریری حکمنامہ بھی وہاں متعین پولیس حکام کے حوالے کردیا تھا شہباز گل کی لیگل ٹیم کے ہمراہ پی ٹی آئی رہنما اور سابق وفاقی وزیر مراد سعید بھی ہیں لیکن انہیں دروازے پر روک لیا گیا تھا-

دوسری جانب اسلام آباد پولیس نے شہباز گل پر مقدمہ اور مبینہ تشدد سے متعلق بیان قلمبند کرانےکے لیے اشتہار جاری کیا تھا اشتہار میں کہا گیا تھا کہ شہبازگل پر تشدد سے متعلق کسی کے پاس کوئی شہادت ہے تو اپنا بیان ریکارڈ کرادے اس حوالے سے کوئی بھی شہری آئی جی اسلام آبادکے دفتر میں بیان قلم بندکراسکتا تھا-

واضح رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے شہباز گِل پر ریمانڈ کے دوران تشدد کے الزامات پر آئی جی اسلام آباد سے پیر تک رپورٹ طلب کر لی ہے قائم مقام چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس عامر فاروق نے دوران سماعت کہاتھا کہ آہ و بکا مچی ہوئی ہے کہ تشدد ہوگیا، کیا یہ میڈیا ہائپ ہے یا واقعی ایسا ہوا ہے؟ ہم نے یہ دیکھنا ہے۔

آئی جی اسلام آباد نے ریمانڈ کے دوران شہباز گِل پر تشدد کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ میڈیکل رپورٹ کے مطابق کوئی تشدد نہیں ہوا، سانس کی تکلیف کا بتایا گیا ہے اس موقع پر اسپیشل پراسیکیوٹر راجہ رضوان عباسی نے عدالتی استفسار پر بتایا تھا کہ شہباز گل کو جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا گیا تو انہوں نے تشدد کا نہیں بتایا

شہبازگل کے ڈرائیور کے بھائی کی عبوری ضمانت منظور

سافٹ ویئر اپڈیٹ، میں پاک فوج سے معافی مانگتی ہوں،خاتون کا ویڈیو پیغام

عمران خان نے ووٹ مانگنے کیلئے ایک صاحب کو بھیجا تھا،مرزا مسرور کی ویڈیو پر تحریک انصاف خاموش

شہباز گل کی گرفتاری، پی ٹی آئی کے ڈنڈا بردار کارکن بنی گالہ پہنچ گئے

شہباز گل کی گرفتاری پی ٹی آئی نے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کر لیا

نعرے ریاست مدینہ کےاورغلامی امریکہ کی واہ شہبازگل باجوہ