fbpx

منی لانڈرنگ اسکینڈل: شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 25ستمبر تک توسیع

لاہور: عدالت نے مسلم لیگ(ن) کے صدر شہباز شریف اور اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 25ستمبر تک توسیع کردی۔

باغی ٹی وی : تفصیلات کے مطابق لاہور کی بینکنگ کورٹ میں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کے خلاف شوگر ملز کے ذریعے مبینہ منی لانڈرنگ کیس کی سماعت ہوئی مالیاتی اسکینڈل میں شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز عبوری ضمانت کے معاملے پر ایف آئی اے بینکنگ جرائم کورٹ میں پیش ہوئے۔

عدالت میں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں توسیع کے لیے دائر درخواست کی سماعت کے دوران ایف آئی اے کے تفتیشی افسر بھی عدالت میں پیش ہوئے بینکنگ کورٹ کے جج نے ایف آئی اے کے تفتیشی افسر سے سوال کیا کہ الزام کیا ہے اور تفتیش کس مرحلے پر ہے؟

آٹے کا 20کلو گرام کا تھیلا 30 روپے مہنگا، قیمت میں مزید اضافے کا امکان ہے فلور ملز ایسوسی ایشن

تفتیشی افسر نے جواب دیا کہ کچھ اکاؤنٹس کھولے گئے جن میں خفیہ ٹرانزیکشنز ہوئیں۔

اس موقع پر شہباز شریف جج کی اجازت سے روسٹرم پر آگئے اور کہا کہ یہ کیس نیب میں دائر کیس کی ہی نقل ہے نیب نے بھی اسی طرح کے کیس کی انکوائری کی لیکن کچھ نہیں ملا،ہائیکورٹ نے حکم نامے لکھا کہ نیب کے پاس ٹھوس شواہد نہیں ہیں-

انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے نے حقائق کے برعکس مقدمہ بنایا ہے،ایک ہی کیس کو دو ادارے نہیں دیکھ سکتے ہیں،تمام الزامات پر مکمل جواب پہلے ہی جمع کروا چکے ہیں میرا رمضان شوگر ملز سے کوئی تعلق نہیں میں شوگر مل کا نہ ڈائریکٹر ہوں اور نہ ہی کوئی تنخواہ لیتا ہوں، میں نے وزارتِ اعلیٰ کے دوران جو کام کئے اس سے شوگر مل کو نقصان ہوا۔

بینکنگ کورٹ کے جج نے شہباز شریف سے مخاطب ہو کر کہا کہ ایف آئی اے کے پاس یہ کیس 2 ماہ سے زائد عرصے سے ہے، اگر آپ کہتے ہیں کہ یہ نیب کا کیس ہے تو ہائر فورم سے رجوع کریں۔

شہباز شریف نے انہیں بتایا کہ ہم کیس فائل کرنے کا سوچ رہے ہیں۔

عدالت کی جانب سے تفتیشی رپورٹ مکمل نہ ہو نے پر فیڈر ل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی ا ے ) پر برہمی کا اظہار کیا گیا فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ افسوس ہے کہ دو ماہ سے ایف آئی اے نے تفتیش مکمل نہیں کی اور تفتیشی ٹیم نے دو ماہ میں صرف چار لائنیں لکھی ہیں۔

بینکنگ کورٹ کے جج نے ایف آئی اے کے تفتیشی افسر کو ہدایت کی کہ ہوائی باتیں عدالت میں نہ کریں، مجھے آئندہ سماعت پر بتائیں کہ تفتیش میں کیا پیش رفت ہوئی۔

حمزہ شہباز نے عدالت کو بتایا کہ قید کے دوران ایف آئی اے والے مجھ سے تفتیش کرتے رہے، اب گرفتار کرنا چاہتے ہیں، انہوں نے پہلے گرفتار کیوں نہ کیا؟

بعدازاں عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 25ستمبر تک توسیع کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت ملتوی کردی۔

پاکستان میں کورونا کے باعث مزید 79 اموات