شہری کے اکاؤنٹ سے 84 لاکھ سے زائد رقم کی خورد برد کرنے والے نیشنل بینک کے 3 ملازمین گرفتار

شہری کے اکاؤنٹ سے 84 لاکھ روپے کی خورد برد کرنے والے نیشنل بینک کے تین ملازمین سمیت ایک شہری کو گرفتار کر لیا گیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ایف آئی اے کمرشل بینکس سرکل نے کارروائی کے دوران 84 لاکھ سے زائد رقم کی خورد برد میں ملوث نیشنل بینک کے 3 ملازمین اور ایک شہری کو گرفتار کرلیا۔ ڈپٹی ڈائریکٹر کمرشل بینکس سرکل فہد خواجہ کے مطابق بینک ملازمین کی ملی بھگت سے جعل سازی اور فراڈ کی واردات نیشنل بینک کے این او آر کمپلیکس میں کی گئی۔
اشہد صدیقی نامی آئی ٹی ماہر نے بینک ملازمین کی ملی بھگت سے نجی کمپنی کے اپنے ہم نام اکاؤنٹ ہولڈر کی رقم اپنے اکاؤنٹ میں منتقل کی۔ بینک مینجر کی شکایت پر ایف آئی اے نے 6 افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔
بینک ملازمین کی گرفتاری عمل میں آئی۔ فراڈ میں ملوث خالد رشید، حسین میمن سمیت مزید دو بینکار بھی گرفتار کیے جائیں گے، فراڈ میں مختلف برانچز کے بینکاروں میں اے وی پی، مینیجر آپریشن افسر، افسر گریڈ ون، نیجر، ہیڈ کیشئیر بھی شامل ہیں جن کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔
خیال رہے کہ بینک ملازمین کے فراڈ کی یہ خبر آنے کے بعد بینک صارفین میں کافی تشویش پائی جاتی ہے۔ صارفین کا کہنا ہے کہ اگر بینکوں میں بھی عوام کا پیسہ محفوظ نہیں ہے تو عوام کہاں جائے؟ .

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.