fbpx

لانگ مارچ میں ہنگامہ آرائی،شیخ رشید،مراد سعید سمیت دیگر کو شامل تفتیش ہونے کا حکم

لانگ مارچ میں ہنگامہ آرائی،شیخ رشید،مراد سعید سمیت دیگر کو شامل تفتیش ہونے کا حکم

پی ٹی آئی لانگ مارچ کے دوران املاک کو نقصان پہنچانے اور جلاؤ گھیراؤ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی

اسد عمر، علی نواز اعوان، راجہ خرم نواز اور دیگر ملزمان اسلام آباد کی مقامی عدالت پہنچ گئے مقدمات میں نامزر پی ٹی آئی رہنماوں کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا جو بعد میں سنا دیا گیا شیخ رشید، شہریار آفریدی، قاسم خان سوری، مراد سعید، علی محمد خان کی ضمانت منظور کر لی گئی،وکیل شہر یار آفریدی نے کہا کہ تھانہ کوہسار میں درج مقدمات میں لگائی گئی دفعات قابل ضمانت ہیں، عدالت نے کہا کہ تھانہ ترنول، گولڑہ اور آئی نائن کے مقدمہ میں کوئی بھی شامل تفتیش نہیں ہوا ،جج نے وکیل کی ہدایت کی کہ میں تفتیشی افسر کو پابند کر دیتا ہوں آپ شامل تفتیش ہو جائیں، عدالت نے استفسار کیا کہ ابھی عدالت میں کون کون سے ملزمان پیش ہوئے ہیں؟ وکیل نے کہا کہ قاسم خان سوری اور شہریار آفریدی عدالت میں موجود ہیں، اسلام آباد کی مقامی عدالت نےپی ٹی آئی رہنماوں کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور کرلی اسلام آباد کی مقامی عدالت کی ملزمان کو تمام مقدمات میں شامل تفتیش ہونے کی ہدایت کر دی،

سیشن کورٹ اسلام آباد میں تحریک انصاف کے رہنماؤں علی محمد اور مراد سعید کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت ہوئی جج نے ریڈر کو ہدایت کی کہ تھانہ آئی نائن، گولڑہ اور ترنول کے تفتیشی افسران کو بلائیں، علی محمد اور مراد سعید ابھی شامل تفتیش ہو کر عدالت کو آگاہ کریں،سیشن کورٹ اسلام آباد کے جج نے استفسارکیا کہ کس کس ملزم کی حاضری نہیں ہوئی؟ عدالتی عملے نے کہا کہ شیخ رشید اور پرویز خٹک کی ابھی تک حاضری نہیں ہو سکی ضمانت کی درخواست پر سماعت کے دوران مراد سعید نے بولنے کی استدعا کر دی ،مراد سعید نے عدالت میں کہا کہ ملک کے خلاف سازش ہوئی، اسپیکر نے سپریم کورٹ کو مراسلہ بھیجا،ہم نے اپنا آئینی اور جمہوری حق استعمال کیا، ہم اپنی آواز اٹھانے کے لیے سڑکوں پر نکلے، ہم نے اپنے ملک کے لیے قربانیاں دی ہیں، میرے خلاف بغاوت کا مقدمہ درج کیا گیا، مراسلہ دیکھ چکا ہوں ،گورا ہمارے ملک کو ہدایت دیتا ہے گورا کہتا ہے کہ اگر تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو ئی تو آپکو معاف کر دینگے،روز نیا مقدمہ درج کیا جاتا ہے،

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے 25 مئی کو لانگ مارچ کا اعلان کیا تھا، لاہور سے جب لانگ مارچ کے شرکا نکلے تھے تو انکا پولیس کے ساتھ تصادم ہوا تھا، ان دنوں پنجاب کی صوبائی حکومت نے دفعہ 144 نافذ کر رکھی تھی، لانگ مارچ کے شرکا اور پولیس میں کئی مقامات پر تصادم ہوا تھا، پولیس نے پی ٹی آئی کے رہنماوں و کارکنان کو گرفتار بھی کیا تھا

لانگ مارچ کے بعد تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سمیت دیگر پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت پر بھی مقدمہ درج کیا گیا تھا، اسلام آباد میں پی ٹی آئی کا لانگ مارچ عمران خان سمیت 150افراد کیخلاف 3 مقدمات درج کر لئے گئے مقدمات میں جلاؤ گھیراؤ اور توڑ پھوڑ کی دفعات شامل کی گئی ہیں، مقدمہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سمیت باقی قیادت، کارکنان پر درج کئے گئے ہیں، مقدمات میں 39 افراد کی گرفتاری بھی ظاہر کی گئی ہے ،درج مقدمات میں اسد عمر، عمران اسماعیل ، راجہ خرام نواز ،علی امین گنڈا پور اور علی نواز اعوان کے نام بھی شامل ہیں،وزیراعلی گلگت بلتستان پر بھی مقدمہ درج کیا گیا تھا، فواد چودھری پر جہلم میں مقدمہ درج کیا گیا تھا

اللہ تعالیٰ اس ملک کے سیاست دانوں کو ہدایت دے،لاہور ہائیکورٹ کے ریمارکس

پی ٹی آئی عہدیدار کے گھر سے برآمد اسلحہ کی تصاویر سامنے آ گئیں

لانگ مارچ، عمران خان سمیت تحریک انصاف کے رہنماؤں پر مقدمہ درج

کارکن تپتی دھوپ میں سڑکوں پرخوار،موصوف ہیلی کاپٹر پرسوار،مریم کا عمران خان پر طنز

پولیس پہنچی تو میاں محمود الرشید گرفتاری کے ڈر سے سٹور میں چھپ گئے

لانگ مارچ میں فیاض الحسن چوہان کتنے بندے لے کر نکلے،ویڈیو وائرل