شرافت کا لبادہ اوڑھ کر کیا کیا ہوتا رہا،کتنے ارب کی کرپشن کی سب سامنے آگیا

جہانیاں(نمائندہ باغی ٹی وی)تیسری مرتبہ ایم این اے بننے والے چوہدری افتخار نذیر ان کے بھائی عطاالرحمان نے پی پی رہنما کے ساتھ مل کر جعلسازی کی ،قومی خزانے کو پانچ ارب کا نقصان ہوا۔
تفصیلات کے مطابق افتخار نذیر پہلی مرتبہ پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ سے عام انتخابات 2008 میں حلقہ این اے 159 سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے۔اس کے بعد وہ 2013 میں لیگ کے ٹکٹ سے ایک بار پھر ایم این اے بنے ۔
اپنے پہلے دور اقتدارمیں لیگی ارکان اسمبلی نے سکھر سے وفاقی وزیر خورشید شاہ کی مدد سے فیصل آباد کے بند یونٹ کو بیمارصنعت قرار دیا۔اس جعل سازی میں انہوں نے خورشید شاہ کو بھی اپنا ساتھی اور شئیر ہولڈر بنالیا۔پانچ ارب روپے سے زیادہ مالیت کے ادار کو محض سات کروڑ کی مالیت کا ظاہر کرکے خریداگیا۔جس کی وجہ سے قومی خزانے کو اربوں کا نقصان ہوا۔اس کے علاوہ یہ انکشاف بھی ہوا کہ فکیٹری خریدتے ہی بینکوں میں جعلی اکاونٹ کھلوائے گئے جن میں اربوں روپے کی ٹرانزیکشنزکی گئیں۔بینک میں اکاونٹس کی ذمہ داری ایک سابق بینکر کو سونپی گئی تھی۔ذرائع نے انکشاف کیا کہ اس کام میں خورشید شاہ 25 فیصد شئیرز کے مالک تھے مگر ان کا نام کہیں بھی ظاہرنہیں کیاگیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.