fbpx

سندھ حکومت کا مردم شماری نتائج کو پارلیمنٹ میں اٹھانے کا فیصلہ

سندھ حکومت نے مردم شماری نتائج کو ایک بار پھر مسترد کرتے ہوئے معاملے کو پارلیمنٹ میں اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے وزیراعلیٰ سندھ پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کے لیے اسپیکر قومی اسمبلی کو خط لکھیں گے۔
تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت کے مردم شماری نتائج پر اعتراضات کے سبب صوبے میں بلدیاتی حلقہ بندیاں اور بلدیاتی الیکشن زیر التواء ہیں، سندھ حکومت نے مردم شماری نتائج کے خلاف رواں سال مئی میں پارلیمنٹ کو ریفرنس بھیجا تھا تاہم تین ماہ گزرنے کے باوجود سندھ حکومت کے ریفرنس پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس نہیں بلایاگیا، اب وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ مردم شماری سے متعلق مشترکہ مفادات کونسل کے فیصلے پر ایک اور خط اسپیکر قومی اسمبلی کو لکھیں گے۔
سندھ حکومت کے ذرائع کے مطابق آئین پاکستان کی شق 154کے تحت صوبائی حکومت مشترکہ مفادات کونسل کے فیصلے کو پارلیمان میں چیلنج کرسکتی ہے، اسی لیے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کے لیے سندھ حکومت کا دوسرا خط رواں ہفتے چیئرمین سینیٹ، اسپیکر قومی اسمبلی کو ارسال کیا جائےگا۔
واضح رہے کہ سندھ کابینہ نے الیکشن کمیشن کی مجوزہ بلدیاتی حلقہ بندیوں پر بھی تحفظات کا اظہار کیا ہے۔