ایڈز پھیلے، تھر میں بچے مریں،لیکن سندھ کے صوبائی وزیر بلاول کے بنے ذاتی خادم

پیپلز پارٹی کی رہنما سینیٹر روبینہ خالد کا کہنا ہے کہ یہ خبر درست نہیں، تصویر فیک ہے

پیپلز پارٹی کے صوبائی وزیر، اراکین اسمبلی بلاول زرداری کے ذاتی نوکر بن گئے، پاؤں میں جوتیاں تک پہنانا شروع کر دیں

الیکشن کمیشن نے بلاول زرداری کو شوکاز نوٹس جاری کر دیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پیپلز پارٹی کے اراکین اسمبلی بلاول زرداری کے ذاتی نوکر بن کر رہ گئے، بلاول زرداری کے علاقے لاڑکانہ رتو ڈیرو میں اٰیڈز کے مرٰیضوں مٰیں اضافہ ہو رہا ہے، کراچی میں پانی کی قلت ہے، تھر پارکر سندھ میں ادویات اورغذائی قلت کی وجہ سے بچے مر رہے ہیں جن کی پیپلز پارٹی کو کوئی پرواہ نہیں، وہ لوگ جو سندھ کے حلقوں سے منتخب ہوئے انہیں عوامی مسائل کی کوئی غرض نہیں وہ بلاول زرداری کی جوتیاں سیدھی کر رہے ہیں،

باغی ٹی وی کو سندھ کے ایک رکن اسمبلی کی ایک تصویر ذرائع سے ملی ہے جو بلاول زرداری کے پاؤں میں جوتی پہنا رہے ہیں، رکن سندھ اسمبلی امداد پتافی کا تعلق ٹنڈو الہہ یار سے ہے ان کے پاس ورکس اینڈ سروسز کی وزارت بھی ہے، وہ بلاول زرداری کے پاوں میں جوتی پہنا رہے ہیں. تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بلاول زرداری کرسی پر بیٹھے ہیں اور صوبائی وزیر امداد پتافی نیچے بیٹھ کر ان کے پاؤں میں جوتی پہنا رہے ہیں

عوامی حلقوں نے صوبائی وزیر کی جانب سے بلاول کو جوتی پہنانے پر شدید ردعمل ظاہر کیا ہے، عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ پی پی کے اراکین اسمبلی کو بلاول کی نوکری کی بجائے عوامی مسائل کے لئے کام کرنا چاہئے، عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ پی پی کی سندھ میں گزشتہ دو دہائیوں سے حکومت ہے لیکن عوامی مسائل حل نہیں ہوئے کیونکہ اراکین اسمبلی کو اس میں دلچسپی نہیں ،اراکین اسمبلی بھی بلاول کی چاپلوسی میں لگے ہوئے ہیں.

پیپلز پارٹی کی رہنما سینیٹر روبینہ خالد نے باغی ٹی وی کو اس خبر پر ردعمل دیتے ہوئے اس بات کی تردید کی ہے اور کہا کہ یہ خبر درست نہیں. ہر کوئی آسانی سے دیکھ سکتا ہے کہ تصویر کو جھوٹ پھیلانے کے لئے جوڑا گیا ہے، اگر کسی دوسرے کا جوتا اپنے پاوں میں پہن لیا جائے تو واضح نظر آتا ہے کہ یہ جوڑا گیا ہے،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.