سموگ تدارک کیس،عدالت کا آلودگی والی فیکٹریوں کو سیل کرنے کا حکم

0
109
lahore high court

لاہور ہائیکورٹ: اسموگ کے تدارک کے لیے دائر درخواست پر سماعت ہوئی،جسٹس شاہد کریم نے شہری ہارون فاروق کی درخواست پر سماعت کی

عدالت نے آلودگی پھیلانے والی فیکٹروں کو سیل کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ جو فیکٹراں کالا دھواں چھوڑ رہی ہیں، انہیں سیل کیا جائے،جب تک وہ بیان حلفی نہیں دیں گے تو ڈی سیل نہیں کیا جائے گا،بیان حلفی یہ دیں کہ اگر دوبارہ خلاف ورزی ہوئی تو فیکٹری کو مسمار کر دیا جائے گا ،کمشنر لاہور محمد علی رندوا عدالت کے روبرو پیش ہوئے،عدالت نے کہا کہ لگتا ہے اب ہم صحیح راستے پر جا رہے ہیں، کمشنر لاہور نے کہا کہ دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف بلا تفریق کارروائی کریں گے ،عدالت نے کہا کہ پی ڈی ایم اے تو سویا ہوا ہے، ہم ان کو جگاتے ہیں،کمشنر لاہور نے کہا کہ ہم نے ٹریفک پولیس کو بھی ہدایت کی ہے کہ سموگ پھیلانے والی گاڑیوں کو بند کیا جائے، عدالت نے کہا کہ اگر کوئی گاڑی سموگ کا باعث بن رہی ہے تو اس کی تصویریں بنائیں ،اگلے سال سے ہمیں شروع میں ہی بڑے اقدامات اٹھانے پڑیں گے، یہ دو ماہ بہت اہم ہیں،

کمشنر لاہور نے کہا کہ ہم نے سائیکلنگ کے رجحان کے لیے کافی اقدامات کیے ہیں،ہم نے ٹیپا سے بات کی ہے کہ سائیکلنگ کے لیے ایک ٹریک بنایا جائے، ہم کوشش کریں گے کہ سائکلنگ والے افراد کو ہوٹلوں پر چیزیں ڈسکاؤنٹ سے ملیں، عدالت نے کہا کہ آپ پرائیویٹ سیکٹر کو بھی اس میں شامل کریں،ہم ان پانچ، چھ ماہ میں سائکلنگ کو دوبارہ شروع کر سکتے ہیں، کمشنر لاہور نے کہا کہ ہم اب اخبار میں اشتہار دیں گے کہ درخت کاٹنا ایک جرم ہے،عدالت نے کیس کی سماعت 7 نومبر تک ملتوی کر دی

بیرون ملک سے آنے والے مسافروں کی کورونا اسکریننگ دوبارہ سخت کرنے کا فیصلہ 

فردجرم عائد کرنی تھی توکرونا ہو گیا،عدالت نے شہباز شریف کو پھر طلب کر لیا

نیب میں اکثر سوالوں کے جواب میں شہباز شریف نے کہا مجھے نہیں پتہ ،ارشاد بھٹی

سائیکل کرائے پر دینے کے لیے مختلف پوائنٹ بنانے کے لیے اسیکم بنائی جائے

Leave a reply