fbpx

سوچا نہیں تھا پی ایس ایل 6 ترانے کو اتنی پذیرائی ملے گی نصیبو لعل

پاکستان میوزک انڈسٹری کی عالمی شہرت یافتہ گلوکارہ نصیبو لعل کا کہنا ہے کہ سوچا نہ تھا پی ایس ایل کے ترانے کو اتنی پذیرائی ملے گی جن لوگوں نے مجھے لائیک کیا ان کی شکر گزار ہوں-

باغی ٹی وی :پی ایس ایل کے پاکستان سپر لیگ کے چھٹے ایڈیشن کے لیے آفیشل اینتھم ’گروو میرا‘ کو ریلیز ہونے کے بعد سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور مختلف ٹرینڈز سے یہی تاثر ابھرا کہ شائقین کو یہ ترانہ پسند نہیں آیا جبکہ اس گانے پر میمز بھی بنائے جارہے تھے اور پی ایس ایل 6 کا آفیشل ترانہ سُننے کے بعد زیادہ تر مداحوں نے علی ظفر سے پاکستان سپر لیگ کے لیے دوبارہ گانا ریلیز کرنے کا مطالبہ کیا تھا-

سوشل اور مین اسٹریم میڈیا پر جاری بحث سے قطع نظر پاکستان کی عالمی شہرت یافتہ گلوکارہ نصیبو لعل کا اس حوالے سےپہلا ردعمل سامنا آیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق گلوکارہ نصیبو لعل کا کہنا ہے کہ پی ایس ایل کا گانا پاکستان کے لئے گایا، سوچا نہ تھا کہ اتنی پذیرائی ملے گی یہ کامیابی اللہ پاک نے دی ہے۔

گلوکارہ نے کہا کہ پی سی بی نے جب کال کی تو یقین نہیں آیا میں نے پہلی بار ایسا گانا گایا ہے آج تک مجھ سے ترانہ نہیں گوایا گیا۔ جب ترانہ گایا تو ڈر تھا کہ کہیں فلاپ نہ ہوجائے۔

انہوں ںے شائقین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جن لوگوں نے مجھے لائیک کیا ان کی شکر گزار ہوں پاکستان کا گانا ہے اور پاکستان کا فخر ہے پاکستان کے لئے گایا ہے۔

نصیبو لعل کا کہنا تھا کہ یہ گانا اونچے سر کا تھا میں نے گا دیا یہ ترانہ پاکستان کی بات تھی اس لیے جذبے بلند تھے۔

واضح رہے کہ پاکستان سُپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے سیزن کے آفیشل ترانے ’گروو میرا‘ پر جہاں شائقین کرکٹ اور موسیقی کے مداحوں کی جانب سے شدید برہمی کا اظہار کیا جارہا ہے تو وہیں کچھ شخصیات ایسی بھی ہیں جو ’گروو میرا‘ کی خوب تعریفیں بھی کررہی ہیں۔

انہی شخصیات میں مہوش حیات، گوہر رشید اور فاطمہ بھٹو بھی شامل ہیں جنہیں پاکستان سُپر لیگ کے چھٹے ایڈیشن کا آفیشل ترانہ بھاگیا ہے-

فاطمہ بھٹو نے اپنے تصدیق شدہ ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ’گروو میرا‘ کی ویڈیو شیئر کی کرتے ہوئے لکھا تھا کہ مجھے ذاتی طور پر یہ ترانہ بہت پسند آیا ہے خاص کر نصیبو لال کی گلوکاری نے اس ترانے میں مزید چار چاند لگائے ہیں۔

دوسری جانب اداکارہ مہوش حیات نے ترانے کے لیے پسندیدگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں اب تک نہیں سمجھ سکی کہ اس گانے میں لوگوں کو مسٔلہ کیا ہے؟ یہ ترانہ اپنی نوعیت کے لحاظ سے بولڈ اور نئے انداز پر مبنی ہے، مجھے تو پی ایس ایل 2021ء کا گیت بے حد پسند آیا۔

جبکہ گوہر رشید کہا کہنا تھا کہ ہمیں ہمیشہ پی ایس ایل ترانہ کو کیوں ضائع کرنا پڑتا ہے؟ کیا یہ رسم بن گئی ہے؟ گروو میرا ایک اچھا اسٹیڈیم ترانہ ہے۔

انہوں نے ترانے کے لئے پسندیدگی کا اظہار کرتے ہوئے لکھا تھا کہ مجھے یہ پسند ہے ! یاد رکھیں اس وقت یعنی جہاں کورونا جیسی وبا نے پوری دنیا کو ہلا لر رکھ دیا یے میں # PSL6 شو لگانا آسان نہیں ہے تو آئیے کچھ احترام اور تعاون کا مظاہرہ کریں دنیا ہمیں دیکھ رہی ہے !!

پی ایس ایل ترانے پر تنقید ایک رسم بن گئی ہے ، مہوش حیات اور گوہر رشید ناقدین پر…

فاطمہ بھٹو کو پی ایس ایل 6 ترانے میں کیا بات اچھی لگی ؟

پی ایس ایل 6 ترانے کی ریلیز کے بعد علی ظفر سے متعلق ٹوئٹر پر ٹرینڈز

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.