طلبہ کو آئینی اور جمہوری حق دیا جائے، کلیم اللہ ناظم اسلامی جمعیت طلبہ خیبر پختونخواہ

طلبہ یونین پر عائد پابندی ختم کرکے فی الفور طلبہ یونین کے الیکشن کرائے جائے۔اور طلبہ کو انکا آئینی اور جمہوری حق دیا جائے۔۔ان خیالات کا اظہار کلیم اللہ ناظم اسلامی جمعیت طلبہ خیبر پختونخواہ نے کیا۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ 37 سالوں سے طلبہ یونین پر پابندی ھے جسکی وجہ سے طلبہ اپنے آئینی وجمہوری حق سے محروم ہیں سابقہ اور موجودہ تمام حکومتوں نے اپنے منشور میں اور الیکشن کمپین میں ہمیشہ طلبہ سے آسکی بحالی پر اور اقتدار سنبھالتے ہی اسکے الیکشن کرانے کے دعوے اور وعدوں پر ووٹ لیتے ہیں لیکن اقتدار ملنے کے بعد اپنے وعدوں اور اعلانات کو عملی جامہ پہنانے میں ناکام اور مکر جاتے ہیں۔۔انہوں نے کہا کہ طلبہ یونین نے 1970 سے 1980 کی دو دہائیوں میں طلبہ یونین کے پلیٹ فارم سے سیاست،سائنس،طب،انجنیئرنگ،ادب،صحافت،سمت ہر شعبے میں ملک کو بہترین قیادت اور غیر معمولی لوگ میسر کئے ہیں اور اسی پلیٹ فارم سے جانے والے افراد نے دنیا بھر میں نہ صرف لوہا منوایا ھے بلکہ ان لوگوں کی ملک کیلئے گراں قدر حدمات بھی ہیں انہوں نے کہا کہ طلبہ یونین پر پابندی کے بعد تعلیمی ادارے بالحصوص جامعات کی فضا میں میں بے چینی، انتہاپسندی، عدم برداشت، لسانیت، صوبائیت پر مبنی پرتشدد رویوں نے جنم لیا ھے لہذا حکومت فوری طور پر تعلیمی اداروں کو امن کا گہوارہ اور غیر نصابی سرگرمیوں کا مرکز بنانے کیلئے جلد از جلد طلبہ یونین کو بحال کرکے انکے الیکشن کرائے۔۔انہوں کہا کہ اسلامی جمعیت طلبہ طلبہ یونین کی بحالی اور الیکشن کے انعقاد کیلئے اپنی جدوجہد کو جاری رہ کینگ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.