fbpx

سپریم کورٹ، لیکچرارز مستقلی سے متعلق کیس ،عدالت کا بڑا حکم

سپریم کورٹ، لیکچرارز مستقلی سے متعلق کیس ،عدالت کا بڑا حکم
باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ میں خیبرپختونخوا میں گریڈ 17 کے 67 لیکچرارز کی مستقلی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی

عدالت نے لیکچرارز مستقلی سے متعلق کیس واپس پشاور ہائیکورٹ کو بھیج دیا ،سپریم کورٹ نے کہا کہ پشاور ہائیکورٹ 4 ماہ میں کیس کا فیصلہ کرے، جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ کنٹریکٹ پر کام کرنے والے 17 گریڈ کے ملازمین مستقل کیسے ہوسکتے ہیں؟ چیف جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ 17گریڈ کے ملازمین بغیر ایف پی ایس سی ٹیسٹ مستقل نہیں ہوسکتے، ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل نے کہا کہ ملازمین ایک پروجیکٹ میں بھرتی ہوئے پھر مستقل کر دیئے گئے، عدالت نے کہا کہ 17گریڈ کا سول سرونٹ صرف پبلک سروس کمیشن کے ذریعے ہی بھرتی ہوسکتا ہے، جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ بیک ڈور کنٹریکٹ میں بھرتیاں ہوئیں اور انہیں مستقل کیا گیا،بیک ڈور بھرتیاں کی جاتی ہیں اور پھر ایک ایکٹ لاکر انہیں مستقل کیا جاتا ہے، ہائیکورٹ میں جائیں وہاں سارے سوالات کھل کر سامنے آجائیں گے،

ریلوے کو ہم نے تباہ کیا 6 ماہ سے پہلے جو ریلوے میں ہورہا اس کا میں ذمہ دار نہیں ہوں : وزیر ریلوے

ریلوے کس کے دور میں اچھی رہی، سعد رفیق یا شیخ رشید؟ کمیٹی میں انکشاف

ٹرین حادثے میں 2 ریلوے اور 2 پولیس اہلکار بھی جاں بحق

سندھ ہائیکورٹ کا تاریخی کارنامہ،62 لاپتہ افراد بازیاب کروا لئے،عدالت نے دیا بڑا حکم

انسان کی لاش مل جائے انسان کو تسلی ہوجاتی ہے،جبری گمشدگی کیس میں عدالت کے ریمارکس

عمران خان لاپتہ، کیوں نہ نواز شریف کیخلاف مقدمے کا حکم دوں، عدالت کے ریمارکس

لاپتہ افراد کا سراغ نہ لگا تو تنخواہ بند کر دیں گے، عدالت کا اظہار برہمی

لاپتہ افراد کی عدم بازیابی، سندھ ہائیکورٹ نے اہم شخصیت کو طلب کر لیا