fbpx

گورنر پنجاب کیجانب سے عثمان بزدار کا استعفیٰ مسترد کرنا غیر قانونی ہے، سلمان اکرم راجہ،صورتحال کشیدہ ہوگی تو فوج کو مداخلت کرنا پڑے گی،جسٹس (ر)شائق عثمانی

سینئر قانون دان سلمان اکرم راجہ کا کہنا ہے کہ گورنر پنجاب عمر سرفراز کی جانب سے عثمان بزدار کا استعفیٰ آئینی اعتراض لگا کر مسترد کرنا قانونی طور پر غلط ہے-

باغی ٹی وی : تفصیلات کے مطابق سلمان اکرم راجہ کا کہنا ہے کہ گورنر پنجاب کے پاس آج کوئی استعفیٰ نہیں کہ اس پر غور کرے اور اسے مسترد کرے گورنر کی طرف سے استعفیٰ مسترد کرنے کی کوئی آئینی حیثیت نہیں گورنر کے پاس استعفیٰ کا معاملہ تھا ہی نہیں گورنر کو آئین کے تحت تحفظ حاصل ہے –

سلمان اکرم راجہ کا کہنا تھا کہ گورنر آئینی تحفظ کا فائدہ اٹھا رہےہیں،گورنر شائد آئینی تصاد م کی جانب جارہے ہیں گورنر پنجاب کے پاس اختیار نہیں تھا کہ وہ کہیں الیکشن نہیں ہوا، گورنر عدالت نہیں بلکہ الیکشن کا معاملہ دیکھے اور تصحیح کرے۔

گورنر پنجاب نے عثمان بزدار کا استعفیٰ مسترد کر دیا

عثمان بزدار کی جانب سے صوبائی کابینہ کا اجلاس بلانے کی قانونی حیثیت سے متعلق سوال پر سلمان اکرم راجہ کا کہنا تھا کہ عثمان بزدار نے کابینہ اجلاس اس لیے بلایا کہ وہ خود کو منتخب وزیراعلیٰ ظاہر کریں۔

سلمان اکرم راجہ کا کہنا ہے کہ عثمان بزدار استعفیٰ دینے کے بعد بطور عبوری وزیراعلیٰ کام کر رہے ہیں لیکن حلف اٹھاتے ہی حمزہ شہباز وزیراعلیٰ پنجاب بن جائیں گے اور حمزہ شہباز کے حلف اٹھانے کے بعد کسی اور کا خود کو وزیراعلیٰ کہنا غیر آئینی ہو گا۔

اسپیکر قومی اسمبلی آج نومنتخب وزیراعلیٰ حمزہ شہباز سے حلف لیں گے

دوسری جانب جسٹس (ر)شائق عثمانی نے کہا کہ گورنر جو بات آج کررہے ہیں وہ عدالت میں کرنی چاہیے تھی ، عدالتی حکم پر عمل نہیں ہوگا تو خلاف ورزی ہوگی ملک میں موجود ہ صورتحال افسوسناک ہے صورتحال کشیدہ ہوگی تو فوج کو مداخلت کرنا پڑے گی-

انہوں نے کہا کہ موقع تھا عدالتی فیصلے سے پہلے اپنا موقف پیش کرتے جو نہیں کیاگیا پی ٹی آئی کو چاہیےتھا کہ عدالتی فیصلے پر نظر ثانی کی اپیل دائر کرتے جب عدالت کا فیصلہ آگیا تو اب تسلیم نہ کرنا خلاف ورزی ہوگی

آرمی چیف اور بِل گیٹس کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ، پولیو مہم میں تعاون پر پاک فوج کی تعریف