fbpx

‏تباہی سرکار کی ترجمانوں کی فوج خاموش کیوں ہے؟ شیری رحمان

نائب صدر پیپلز پارٹی سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ ‏ملک میں واضح طور پر ڈالر کا بحران ہے،

شیری رحمان کا کہنا تھا کہ لیکن حکومت کی جانب سے سوالات کا کوئی سنجیدہ جواب نہیں مل رہا،ڈالر 170.6 روپے کا ہو گیا تھا جو ملکی تاریخ میں بلند ترین سطح ہے، حکومت کی طرف سے اس اہم معاملے پر خاموشی کیوں ہے؟ ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت ملک کی ہر مالی لین دین کو متاثر کرے گی، ‏جب روپیہ غیر مستحکم ہو تو حکومت کو مارکیٹ/کاروبار کو تسلی دینے کے لئے کچھ کہنا ہوتا ہے، 3 ماہ کے دوران تجارتی خسارے میں اضافہ اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارا اس بحران کی وجہ ہے، روپے پر دباؤ بڑھ رہا ہے کیونکہ پاکستان اب گندم/چینی بھی درآمد کر رہا ہے، برآمدات میں اضافہ کیوں نہیں ہو رہا؟ ‏تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو روپے کی قدر سے جوڑنے کی وضاحت کافی نہیں ہے،ہماری حکومت میں تیل کی قیمتیں بہت زیادہ تھی لیکن روپے کی قدر اس طرح نہیں گری تھی، اگر ہم افغان تجارت کو فنڈ دے رہے ہیں تو اس کی بھی وضاحت کرنی ہوگی، ابھی تباہی سرکار کی ترجمانوں کی فوج خاموش کیوں ہے؟

لاک ڈاؤن ختم کیا جائے، شوہر کے دن رات ہمبستری سے تنگ خاتون کا مطالبہ

لاک ڈاؤن، فاقوں سے تنگ بھارتی شہریوں نے ترنگے کو پاؤں تلے روند ڈالا

کرونا مریض اہم، شادی پھر بھی ہو سکتی ہے، خاتون ڈاکٹر شادی چھوڑ کر ہسپتال پہنچ گئی

کرونا لاک ڈاؤن، رات میں بچوں نے کیا کام شروع کر دیا؟ والدین ہوئے پریشان

پولیس اہلکار نے لڑکی کو منہ بولی بیٹی بنا کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، نازیبا ویڈیو بھی بنا لیں

نوجوان لڑکی سے چار افراد کی زیادتی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پولیس ان ایکشن

خاتون سے زیادتی اور زبردستی شادی کی کوشش کرنے والا ملزم گرفتار

واش روم استعمال کیا،آرڈر کیوں نہیں دیا؟گلوریا جینز مری کے ملازمین کا حاملہ خاتون پر تشدد،ملزمان گرفتار

ینیٹر شیری رحمان نے پاکستان میڈیا ڈویلپمینٹ اتھارٹی کے حوالے سے کہا ہے کہ پاکستان میڈیا ڈویلپمینٹ اتھارٹی قائم کرنے کے پیچھے حکومتی مقاصد مشکوک ہیں، شیری رحمان کا کہنا تھا کہ حکومتی اقدامات سے لگتا ہے مہنگائی، کرپشن اسکینڈلز اور معیشت نہیں بلکہ میڈیا ہی اس ملک کا بڑا مسئلہ ہے، تحریک انصاف خود کو میڈیا کی پیداوار کہتی تھی اب اسی میڈیا کو پابند کرنے کے طریقے ڈھونڈ رہی، گزشتہ 3 سال میں میڈیا کو شدید اور تاریخی سنسرشپ کا سامنا ہے،سینکڑوں صحافی بیروزگار اور میڈیا سے منسلک ادارے بند ہو رہے، یہ حکومت میڈیا کی آزادی سے اتنا خوفزدہ کیوں ہے؟ حکومت پیمرا کو پہلے ہی الیکٹرانک میڈیا کو سلب کرنے کے لئے استعمال کر رہی،میڈیا کو اپنی گرفت میں لانے کے لئے اتھارٹی کا قیام باعث تشویش ہے،تمام صحافتی تنظیمیں اتھارٹی کے قیام پر سوالات اٹھا چکی ہیں، پیپلز پارٹی میڈیا سنسر شپ کے لئے اس اتھارٹی کے قیام کی شدید مخالفت کرے گی،