fbpx

تجاوزات کی بھرمار،گزرنا دشوار

قصور
دالگراں بازار میں ناجائز تجاوزات کی بھر مار قصور دالگراں بازار میں کوئی ایسی جگہ نہیں جہاں پر دکانداروں اور ریڑی بانوں نے سڑک کو اپنی ذاتی ملکیت نہ سمجھا ہو

تفصیلات کے مطابق قصور ایک تاریخی شہر ہے اور اس کے گلیاں اور بازار بھی پرانے دور کے بنے ہوئے ہیں جو اتنے زیادہ کشادہ نہیں ہیں اوپر سے قصور دالگراں بازار میں آج کل ان میں ناجائز تجاوزات کی بھر مار ہے۔ قصور دالگراں بازار میں کوئی ایسی جگہ نہیں جہاں پر دکانداروں اور ریڑی بانوں نے سڑک کو اپنی ذاتی ملکیت نہ سمجھا ہوا ہو اور اس پر ناجائز تجاوزات بڑھا کر عام شہری کے لیے پریشانی کا باعث ہے تاہم قصور دالگراں بازار کو ناجائز تجاوزات سے پاک کرنے کے لیے ضلعی انتظامیہ کی کاروائی کاغذی حد تک محدود ہے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ قصور دالگراں بازار میں کوئی ایسا دکاندار نہیں جس نے جگہ نہ گھیری ہوئی ہو انہوں نے کہا کہ قصور میں ناجائز تجاوزات کے خلاف گرینڈ آپریشن کے بغیر ناجائز تجاوزات کا خاتمہ ناممکن ہے ارباب اس معاملے کا جلد نوٹس لے کر سخت کاروائی عمل میں لائیں۔ شہریوں نے مزید بتایا کہ دس فٹ کی بازار پر جب دکاندار اور ریڑھی والا ہی قابض ہو جائے تو عام آدمی کہاں جائے گا سرکار کو اس مسئلے پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہیے۔ قصور دالگراں بازار میں تجاوزات کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے شہریوں کا مزید کہنا ہے کہ بازار میں تجاوزات کی بھر مار سے سڑکیں سکڑ کر بہت تنگ ہو چکی ہیں جن پر تھوڑی سا رش تو عام آدمی کے لیے پیدل چلنا محال ہو گیا شہریوں کا مزید کہنا تھا قصور دالگراں بازار پرائمری اسکول کے سامنے سے فلفور تجاوزات ختم کروائیں جائیں اور قصور کی عوام نے ڈپٹی کمشنر قصور سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے