fbpx

تاجر الائنس نے پٹرولیم مصنوعات میں حالیہ اضافہ ناقابل قبول قرار دیدیا

کراچی تاجر الائنس کے چیئر مین ایازمیمن موتی والا نے کہا ہے کہ وزارت خزانہ نے آئندہ پندرہ یوم کے لیئے پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا جو اعلان کیا ہے وہ غریب لوگوں کے لیئے جان لیوا ہے، پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں پہلے ہی آسمان سے باتیں کر رہی ہیں عوام کو ریلیف دینے کی وعدے کر کہ اقتدار حاصل کرنے والوں نے عوام کا خون چوس لیا ہے، ان خیالات کااظہارا نہو ں نے تاجر الائنس کے دفتر سے جاری کردہ بیان میں کیا، ایاز میمن موتی والا نے کہا کہ حالیہ اضافے کے بعد پاکستان میں پٹرول کی قیمت 112روپے 69پیسے ہے جبکہ عالمی منڈی کے حساب سے اگر دیکھا جائے تو پاکستان میں پٹرول بہت مہنگا ہے، حکومت ہر چیز پر ٹیکس لگائے جارہی ہے پاکستان کی تاریخ کی یہ پہلی حکومت ہے جس کی پالیسیاں عام آدمی کی زندگی میں روزانہ کی بنیادوں پر مشکلات اور مسائل بڑھا رہی ہیں، انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اچانک کیا جانے والا اضافہ ناقابل قبول ہے حکومت کے اس عوام دشمن فیصلے نے لوگوں کو نئی مشکل میں ڈال دیا ہے، تاجرا لائنس پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں اضافہ کومسترد کرتے ہوئے اس ظالمانہ فیصلے کو واپس لینے کا مطالبہ کرتی ہے، انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے مہنگائی میں اضافہ ہوتاہے ایک شہر سے دوسرے شہر میں سامان لیکرجانے والی گاڑیوں کو جب پٹرول مہنگاملتا ہے تو وہ لوگ کرائے بڑھا دیتے ہیں اور جیسے ہی کرائے بڑھتے ہیں تو لوگ اشیاء کے نرخ بڑھا دیتے ہیں جس سے عوام متاثر ہوتے ہیں، انہوں نے کہا کہ اب تو لوگ تبدیلی حکومت کے واپس چلے جانے کی دعائیں کر رہے ہیں وزیراعظم عمران خان عوام کے مسائل کو حل کرنے کے لیئے سنجیدہ اقدامات کریں ورنہ وہ دن دور نہیں جو ان کی حکومت کو لے ڈوبے گا۔