fbpx

طالبان رہنما متحرک، حامد کرزئی کے بعد گلبدین حکمت یار سے ملاقات

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق طالبان رہنما انس حقانی کی وفد کے ہمراہ گلبدین حکمت یار سے ملاقات ہوئی ہے

ملاقات میں افغانستان کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا،ملاقات میں آنیوالی حکومت بارے بھی بات چیت کی گئی، انس حقانی نے گلبدین حکمت یار کو افغان طالبان کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا،گلبدین حکمت یار نے بغیر گولی چلے کابل پر کنٹرول کرنے پر افغان طالبان کی پالیسی کو سراہا

طالبان کی قیادت گزشتہ روز قطر سے افغانستان پہنچی اور آج سیاسی ملاقاتیں جاری ہیں، انس حقانی جو طالبان کے معروف رہنما ہیں اور افغانستان کی جیل میں قید بھی رہے ہیں انہوں نے وفد کے ہمراہ حامد کرزئی، عبداللہ عبداللہ سے بھی ملاقات کی تھی اس ملاقات میں طالبان کا وفد شریک تھا، ملاقات میں افغانستان کے حوالہ سے بات چیت کی گئی، باغی ٹی وی کے کابل سے نمائندہ کے مطابق انس حقانی کی قیادت میں وفد نے حامد کرزئی اور عبداللہ عبداللہ سے ملاقات کی ،ملاقات میں انہیں اس بات کی یقین دہانی کروائی گئی کہ افغان طالبان پرامن رہیں گے،تمام سابقہ سرکاری عہدیداروں کو معاف کیا گیا ہے، کسی کو کچھ نہیں کہا جائے گا وہ افغانستان میں ہی رہیں ،ملک چھوڑنے کی ضرورت نہیں،انس حقانی کو دو سال قبل افغان حکومت نے طالبان کے ساتھ معاہدے کے تحت رہا کیا تھا ، انس حقانی مشہور جہادی لیڈر جلال الدین حقانی کے بیٹے ہیں

انس حقانی ایک ایسے وقت میں کابل پہنچے جب طالبان کے قطر دفتر کے سربراہ ملا عبدالغنی برادر بھی دوحہ سے قندھار پہنچے ہیں، ملا عبدالغنی برادر کے ہمراہ کونسل کے دیگر اراکین مسٹر برادر کے ساتھ طالبان قیادت کونسل کے کئی دیگر ارکان بھی ہیں جن میں ملا فضل ، ملا خیر اللہ خیرخواہ ، مولوی عبدالحکیم ، مولوی عبدالسلام حنفی ، شہاب الدین دلاور اور دیگربھی افغانستان پہنچے ہیں،

طالبان رہنماؤں کے قندھار پہنچنے کے چند گھنٹے بعد ، ملا خیر اللہ خیرخواہ اور مولوی عبدالسلام حنفی نے ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عوام کو یقین دلایا کہ افغانستان میں جنگ ختم ہو چکی ہے۔ وہ افغانستان میں ایک ایسا اسلامی نظام اور حکومت قائم کرنے کی پوری کوشش کر رہے ہیں جو تمام جماعتوں اور دنیا کے لیے قابل قبول ہو اور جس میں تمام لوگ اپنے نمائندے دیکھ سکیں۔

واضح رہے کہ کابل پر طالبان کا مکمل کنٹرول ہے، گزشتہ روز طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے پریس کانفرنس میں عالمی دنیا اور افغان قوم کو اہم پیغام دیے، کابل میں حالات زندگی معمول پر ہیں، تعلیمی ادارے، بازار کھلے ہیں، خواتین بھی دفاتر میں کام کر رہی ہیں، طالبان میں اس بار بدلاؤ آیا ہے اور خواتین کو بھی کام کرنے کی اجازت دی گئی ہے، طالبان کی جانب سے کسی قسم کی کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جا رہی،کابل سے نمائندہ باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق طالبان نے شہریوں سے گزشتہ روز اسلحہ جمع کیا اور کہا کہ اب حفاظت ہماری ذمہ داری ہے، طالبان نے ریڈیو ،ٹی وی کے دفاتر سمیت مختلف مقامات کا بھی دورہ کیا اور ملازمین سے بات چیت کی،

افغان طالبان کی جانب سے شہریوں کو مسلسل پیغامات دیئے جا رہے ہیں کہ وہ اپنے کام معمول کے مطابق جاری رکھیں، دوسری جانب افغان شہریوں کی جانب سے بھی طالبان کا خیر مقدم کیا جا رہا ہے، افغان شہری طالبان کے ہوتے ہوئے اپنے آپ کو محفوظ تصور کر رہے ہیں

کابل ایئر پورٹ پر امریکی فوج کی فائرنگ سے 5 افغانی جاں بحق، ایئر پورٹ بند

افغانستان میں بدھ مت کے مقامات کیا واقعی خطرے میں؟ طالبان کا موقف آ گیا

پاک افغان بارڈر طورخم مسافروں کے پیدل آمدورفت کے لئے بدستور بند

کابل، جہاز کے اڑان بھرنے کے بعد 3 افراد گر گئے، 2 کی موت

طالبان کا کابل پر کنٹرول،چین بھی میدان میں آ گیا، بڑا اعلان کر کے سب کو حیران کر دیا

وزیر خارجہ سے افغان وفد کی ملاقات، قریشی کا ڈنمارک کے ہم منصب سے بھی رابطہ

اشرف غنی تاجکستان نہیں آئے، وزارت خارجہ تاجکستان

افغان طالبان کے ترجمان پہلی بار میڈیا کے سامنے آ کر کریں گے اہم اعلان

چین پاکستان اور طالبان اب ملکر بھارت پر حملہ کریں گے، بھارت کی دہائی

افغان طالبان کے ساتھ پاکستان سے کون کونسی جماعت نے رابطہ کیا؟ اہم انکشاف

خبردار،یہ کام کیا تو سختی سے نمٹیں گے، طالبان ترجمان، روسی سفیر کے ساتھ ملاقات طے

ترکی افغان پناہ گزینوں کو روکے گا،طالبان کا سرکاری ملازمین کو بڑا پیغام

اشرف غنی کو اقتدار کی منتقلی کا منصوبہ نہ بنانے پر معاف نہیں کرسکتے،سربراہ افغان مرکزی بینک

امریکا کا طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنے کیلئے مشروط رضا مندی کا اظہار

وزیر خارجہ کا چینی ہم منصب سے رابطہ،افغانستان کی بدلتی صورتحال پرتبادلہ خیال

رہنماوں کو خفیہ نہیں رکھا جائے گا بلکہ..افغان طالبان کا بڑا اعلان

مولانا فضل الرحمان نے افغان طالبان سے کیا امید لگا لی؟

گولی چلائے بغیر کابل پر کنٹرول،طالبان کشمیر آئے تو مودی بھی اشرف غنی کی طرح بھاگ جائیگا،ماہرین

طالبان کی حمایت میں بولنے پر بھارت میں دو مقدمے درج

واضح رہے کہ  طالبان کابل پہنچ گئے ہیں جس کے بعد افغان صدر اشرف غنی ملک سے فرار ہو گئے، کابل میں طالبان کا کنٹرول ہے ، دیگراہم سرکاری عمارتون پربھی افغان طالبان کا قبضہ ہوگیا ہے اس وقت شہرمیں امن وامان کی صورت حال بہتر ہے اور سڑکوں پرافغان طالبان گشت کررہے ہیں اور لوگوں کو ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کی ہدایت بھی کررہے ہیں‌

ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کر تے ہو ئے کہا ہے کہ ‏افغانستان کی پوری مسلم ملت باالخصوص کابل کے شہریوں کو فتح پر مبارکباد پیش کرتے ہیں اللہ کی مدد و نصرت سے یہ کامیابی حاصل ہوئی ہے اللہ کا ہر وقت عاجزی کے ساتھ شکر ادا کرتے ہیں۔ کسی غرور اور تکبر میں مبتلا نہیں ہیں ملا عبدالغنی برادر نے کابل کی فتح پر مبارکبادی پیغام جاری کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ‏طالبان کا اصل امتحان اور آزمائش اب شروع ہوئی ہے کہ وہ کیسے افغان عوام کی خدمت کرتے ہیں اور دنیا کے لیے ایک ایسی مثال بنتے ہیں، جس کی باقی دنیا پیروی کرے

حامد کرزئی،عبداللہ عبداللہ سے طالبان رہنماؤں کی ملاقات، بڑی یقین دہانی کروا دی