fbpx

تمباکو نوشی کے نقصانات تحریر: فرح بیگم

تمباکو نوشی کرنے والا نہ صرف اپنی قبر کھودتا ہے بلکہ تمباکو نوشی کرنے والے انسان کے ساتھ رہنے والے افراد بھی بہت ساری مہلک بیماریوں کا شکار ہوتے ہیں۔ لیکن کوئی بھی اس کے خلاف عملی اقدامات کرنے کو تیار نہیں ہوتا تعلیمی اداروں خاص طور پر کالجوں اور یونیورسٹیوں میں تمباکو نوشی کا رجحان بڑھتا جارہا ہے لڑکوں کے اب کثرت میں لڑکیاں بھی تمباکو نوشی کرتی دکھائی دیتی ہیں۔ کئی نوجوان تو تمباکو نوشی کو ایک فیشن سمجھ کر کرتے ہیں جو جانے انجانے میں اپنی زندگی کا دیا اپنے ہی ہاتھوں گُل کررہے ہوتے ہیں۔ نشہ کسی بھی قسم کا ہو ہمیشہ اس سے بچنے کی کوشش کی جاۓ

تمباکو انسان کو سست اور پست حوصلہ بنا دیتا ہے تمباکو قوت ارادی کا بڑا دشمن ہے۔ اس کے استعمال سے جسم ڈھیلا اور کمزور پڑ جاتا ہے۔ یہ دماغ، بینائی، جگر، پھیپھڑوں اور دل کو کمزور بنا دیتا ہے۔

تمباکو نوشی پیسے کے ضیاع کے علاوہ متعدد بیماریوں کا باعث بنتی ہے جس میں سرفہرست کینسر ہے۔ تمباکو نوشی سے مختلف قسم کا کینسر ہوسکتا ہے جس میں گلے کا کینسر، منہ کا کینسر اور لبلبے کا کینسر قابل زکر ہیں اس کے علاوہ تمباکو نوشی کرنے والوں کے پھیپھڑے بھی بہت متاثر ہوتے ہیں

دنیا بھر میں ایک ارب سے زائد لوگ تمباکو نوشی کرتے ہیں جن میں سے اسی فیصد لوگ ترقی پذیر ممالک سے تعلق رکھتے ہیں۔ پاکستان، بھارت، فلپائن، تھائی لینڈ اور کمبوڈیا میں تمباکو نوش لوگوں کی شرح تیزی سے بڑھ رہی ہے اور اس اضافے کا بڑا سبب ان ممالک کا نوجوان طبقہ ہے۔ ترقی یافتہ ممالک میں جاپان اور چائنہ کے ساٹھ فیصد مرد حضرات سگریٹ نوشی کی عادت میں مبتلا ہیں۔ سگریٹ نوش آبادی میں بارہ فیصد خواتین شامل ہیں جب کہ روزانہ ایک لاکھ بچے سگریٹ نوشی شروع کردیتے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق تمباکو نوشی سے دنیا بھر میں سالانہ آٹھ لاکھ سے زائد افراد موت کا شکار ہوجاتے ہیں۔ عام طور پر لوگ تمباکو کا استعمال نیکوٹین کی کمی کو پورا کرنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

‎تمباکو کی تمام مصنوعات نقصان دہ ہیں اور یہ مختلف قسم کے کینسر اور دیگر صحت کے مسائل کا سبب بن سکتی ہے۔ لہذا ، تمباکو نوشی سمیت تمام تمباکو کی مصنوعات کے استعمال کی سختی سے حوصلہ شکنی کی جانی چاہئے۔ 

آ پ سگریٹ نوش ھوں آپ جتنی ذیاہ سگریٹ نوشی کریں گے، اتنا ہی مسائل میں اضافہ ھو گا۔ نفسیاتی بیماریاں ہونے کے امکانات، بے چینی اور ڈپریشن، الکحل( شراب نوشی) اور منشیات کا ذیادہ استعمال ان کی وجہ سے زہنی صحت کے مزید خراب ہونے کے امکانات ہیں۔

اساتذہ، والدین اور دیگر معززین کو تمباکو نوشی کے خلاف مؤثر اقدام اٹھانے کی ضرورت ہے اکثر شریف اور ہونہار نوجوان سگریٹ نوشی شروع کرتے ہی برے کاموں میں پڑ جاتے ہیں جس کی وجہ سے ان کا مستقبل تباہ ہوجاتا ہے۔

ترک سگریٹ نوشی سے آپ اپنےآپکونہ صرف صحت مند،چست و توانامحسوس کریں گے بلکہ لمبی زندگی پائیں گے  
سگریٹ نوشی کو ترک کرنے کے سلسلے میں مدد حاصل کرنا آپ کا حق ھے۔

Twitter ID: @Iam_Farha