کیا صفائی صرف حکومت کا کام ہے؟

کیا صفائی صرف حکومت کا کام ہے؟
شیخوپورہ (نمائندہ باغی ٹی وی محمد فہیم شاکر سے) طارق روڈ شہر شیخوپورہ کی ایک مشہور سڑک ہے جس کے دونوں اطراف گنجان آبادی کے حامل علاقے ہیں لیکن شاید کوڑا کرکٹ کو تلف کرنے کا کوئی موثر بندوبست نہیں یا عوام کو شعور نہیں جس وجہ سے طارق روڈ پر جا بجا کچرے کے ڈھیر نظر آتے ہیں
نمائندہ باغی ٹی وی کو مذکورہ روڈ کے سروے کے دوران دکانداروں کے منع کرنے کے باوجود لوگ سڑک پر کچرے پھینکتے نظر آئے
یہاں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ صفائی صرف حکومت کا کام ہے یا عوام کو بھی اس سلسلے میں کچھ کردار ادا کرنا ہوگا
دراصل صفائی ایک رویے کا نام ہے اگر انسان خود نہ چاہے تو صفائی نہیں رہ سکتی
مقامی انتظامیہ کے لیے ضروری ہو گیا ہے کہ وہ عوامی آگاہی کے لیے ایسی مہم جاری کریں جس میں ذاتی، گھریلو، اور رہائشی علاقے کی صفائی رکھنے بارے ضروری اور اہم تدابیر شامل ہوں
انتظامیہ ضلع بھر کے سکولز کالجز اور ٹیکنیکل اداروں کے طلبہ کو اس عمل میں شریک کر کے شہر کو صاف ستھرا رکھنے کے لیے اہم کردار ادا کر سکتی ہے
تعلیمی اداروں میں موجود کثیر تعداد میں طلبہ کی اگر ذہن سازی کر دی جائے تو وہ نہ صرف اپنے گھر علاقے اور تعلیمی ادارے کو صاف رکھیں گے بلکہ اپنے ارد گرد موجود لوگوں کو بھی اس پر تیار کریں گے اور اس باہمی زنجیری عمل کی مدد سے شہر بھر کو صاف رکھنے میں تسلسل سے شاندار مدد مل سکتی ہے
اس کے ساتھ ساتھ اگر شہری انتظامیہ کوڑے کرکٹ کو تلف کرنے کے لیے ایک موثر اور مرطوب نظام وضع کرے تو شہر کے اطراف میں کوڑے کے وسیع ذخائر ملنا بھی بند ہوجائیں گے
شہر بھر سے جمع شدہ کوڑا شیخوپورہ بائی پاس کے اطراف میں بھی پھینکا جاتا ہے جس سے وہاں کے لوگوں کو تکلیف ہوتی ہے اور جا بجا چرتے جانور گھاس پھونس کے ساتھ کچرے کے ٹکرے بھی نگل لیتے ہیں جس سے ان کی جان کو خطرات لاحق ہوجاتے ہیں
اب یہ شہری انتظامیہ پر منحصر ہے کہ وہ کس قدر سنجیدگی سے اس مسئلے کے حل کی طرف غور کرتی ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.