تینوں افواج کے سربراہان متفق ہیں کہ کمرشل سرگرمی نہیں ہونی چاہیے،سیکرٹری دفاع کی یقین دہانی

0
45
supreme court

تینوں افواج کے سربراہان متفق ہیں کہ کمرشل سرگرمی نہیں ہونی چاہیے،سیکرٹری دفاع کی یقین دہانی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ میں ملٹری لینڈ تجارتی سرگرمیوں کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی

سماعت کے دوران سیکرٹری دفاع نے عدالت عظمیٰ میں ملٹری لینڈ کیس پر بیان دیتے ہوئے کہا کہ تینوں افواج کے سربراہان متفق ہیں کہ کمرشل سرگرمی نہیں ہونی چاہیے کہا گیا ہے عدالت کو یقین دلائیں کہ مزید کمرشل سرگرمیاں نہیں ہوں گی ،چیف جسٹس گلزار احمد نے سیکرٹری دفاع سے کہا کہ سارے عسکری ہاؤس نے سوسائٹیز بنائی ہیں کیا کررہے ہیں عسکری فور دیکھیں بڑے بڑے اشتہار لگا دیئے بعض اوقات تو لگتا ہے عدالتی حکم کا مذاق اڑا رہے ہیں ہاﺅسنگ سوسائٹیاں بن رہی ہیں کیا دفاعی مقاصد رہ گئے ہیں ؟ آپ اسلام آباد میں بیٹھتے ہیں یہاں بیٹھے ایک کرنل اور میجر کو کنٹرول نہیں کرسکتے وہ اس علاقے کا کنگ بنا ہوا ہے بتایا جائے کمرشل سرگرمیاں ختم کرنے کی کیا پالیسی ہے ، سیکریٹری صاحب یہ کیا ہورہا ہے سنیما اور رہائشی پروجیکٹس چلارہے ہیں آپ؟ یہ سب دفاعی مقاصد کیلئے استعمال ہورہی ہیں زمینیں ؟

سپریم کورٹ نے ملٹری لینڈ پر جاری کمرشل سرگرمیوں سے متعلق پالیسی پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ جو کچھ ہوگیا ہے اس کا کیا ہوگا؟ یہ کیسے ٹھیک کریں گے ؟سیکرٹری دفاع نے جواب دیا کہ جو کچھ ہو چکا اسے ٹھیک کرنے کے لیے کچھ وقت درکار ہے مسلح افواج نے فیصلہ کیا ہے کمرشل سرگرمیوں کی اجازت نہیں دی جائے گی چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ سیکریٹری دفاع صاحب یہ سن لیں اور تحریری بیان دیں جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ پالیسی بتائیں ہمیں اور بتائیں زمین کی حیثیت تبدیلی کا کیا جواز ہے عدالت نے سماعت 30 نومبر تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ دو روز قبل چیف جسٹس گلزار احمد نے کیس کی سماعت کے دوران کہا تھا کہ نیوی، آرمی، ائیر فورس تیزی سے کمرشل سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں ،ڈی ایچ ایز، کنٹونمنٹ بورڈز میں تیزی سے ہاؤسنگ سوسائٹیز بنائی جا رہی ہیں،دفاعی اداروں اور کنٹونمنٹ بورڈز کی یہ سرگرمیاں خلاف آئین ہیں،دفاعی اراضی پر کمرشل کاروبار خلاف آئین اور عدالتی فیصلوں کی خلاف ورزی ہے،سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ دفاعی اراضی کا مقصد تبدیل نہیں کیا جا سکتا،فاعی ادارے تیزی سے کمرشل سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں

قبل ازیں سپریم کورٹ نے کوآپریٹو ہاﺅسنگ سوسائٹی یونین رفاعی پلاٹس پر قبضے کے کیس کا عبوری فیصلہ سنا دیا جس میں پلاٹ نمبر 21 اور 21 اے پر تمام کمرشل سرگرمیاں بند کرنے، پلاٹ نمبر 23 پر جناح کوآپریٹو ہاوسنگ سوسائٹی شادی ہال، پارکنگ بند کرنے اور پارکس اراضی پر تمام سرگرمیاں بند کرنے کاحکم جاری کر دیا ہے

@MumtaazAwan

کراچی کو مسائل کا گڑھ بنا دیا گیا،سرکاری زمین پر قبضہ قبول نہیں،کلیئر کرائیں، چیف جسٹس

سپریم کورٹ کا کراچی کا دوبارہ ڈیزائن بنانے کا حکم،کہا آگاہی مہم چلائی جائے

وزیراعظم کو بتا دیں چھ ماہ میں یہ کام نہ ہوا تو توہین عدالت لگے گا، چیف جسٹس

تجاوزات ہٹانے جائینگے تو لوگ گن اور توپیں لے کر کھڑے ہوں گے،آرمی کو ساتھ لیجانا پڑے گا، چیف جسٹس

سرکلر ریلوے، سپریم کورٹ نے بڑا حکم دے دیا،کہا جو بھی غیر قانونی ہے اسے گرا دیں

ہم نے کہا تھا کیسے کام نہیں ہوا؟ چیف جسٹس برہم، وزیراعلیٰ کو فوری طلب کر لیا

آپ کی ناک کے نیچے بحریہ بن گیا کسی نے کیا بگاڑا اس کا؟ چیف جسٹس کا استفسار

آپ کو جیل بھیج دیں گے آپکو پتہ ہی نہیں ہے شہر کے مسائل کیا ہیں،چیف جسٹس برہم

کس کی حکومت ہے ؟ کہاں ہے قانون ؟ کیا یہ ہوتا ہے پارلیمانی نظام حکومت ؟ چیف جسٹس برس پڑے

شہر قائد سے تجاوزات کے خاتمے کیلئے سپریم کورٹ کا بڑا حکم

کراچی میں سپریم کورٹ کے حکم پرآپریشن کا آغاز،تاجروں کا احتجاج

سو برس بعد بھی قبضہ قانونی نہیں ہو گا،سپریم کورٹ کا بڑا حکم

ہزاروں اراضی کے تنازعات،زمینوں پر قبضے،ہم کون سی صدی میں رہ رہے ہیں ؟ چیف جسٹس

نسلہ ٹاور گرانے سے متعلق نظر ثانی اپیلوں پر سپریم کورٹ کا فیصلہ آ گیا

پاک فوج کے پاس مشینری موجود، جائیں ان سے مدد لیں،نسلہ ٹاور گرائیں، سپریم کورٹ

عہدہ چھوڑ دیں، آپ کے کرنے کا کام نہیں،نسلہ ٹاور نہ گرانے پر سپریم کورٹ برہم

کنٹونمنٹ والوں پر قانون لاگو نہیں ہوتا ؟ کھمبوں پر سیاسی جماعتوں کے جھنڈے کیوں؟ پاکستان کا پرچم لگائیں ،سپریم کورٹ

دفاعی اداروں کی جانب سے کمرشل کاروبار ،سیکریٹری دفاع کونوٹس جاری

ریاست فیل،مکمل تباہی، کیا آپ ہی کو فارغ کردیں؟ سپریم کورٹ کے اہم ترین ریمارکس

ریکارڈ غائب کرنے کیلئے آگ لگتی رہی .اب ایوان صدر میں آگ نہ لگ جائےسپریم کورٹ کے ریمارکس

سب کہتے مگر کرتے کچھ نہیں، اسپتالوں میں گدھے،ڈی سی بادشاہ بنے ہوئے ہیں،سپریم کورٹ برہم

اکانومی ڈیڈ اسٹاک پر پہنچ چکی،ملک میں کالا پیسہ زیادہ ہے،چیف جسٹس کے ریمارکس

آپ کورٹ روم سے چلے جائیں،سپریم کورٹ جماعت اسلامی رہنما پر برہم

Leave a reply