fbpx

تحریک انصاف کی آل اسٹیک ہولڈرز کانفرنس کیلئے سیاسی،سماجی تنظیموں سے رابطے تیز

کراچی : پاکستان تحریک انصاف کراچی کے صدر خرم شیر زمان کی سربراہی میں وفد نے گزشتہ روز نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹریز (نکاٹی) کا دورہ کیا اس موقع پر خرم شیر زمان نے نکاٹی ممبران کو آل اسٹیک ہولڈرز کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی، ہم تمام اسٹیک ہولڈرز کو کالے قانون کے خلاف ایک پیج پر لا رہے ہیں ترمیم کے بعد میئر کے پاس شہر کو چلانے کا کوئی نظام نہیں ہوگاایک غیر منتخب میئر شہر کے مسائل حل نہیں کر سکتا۔
اس موقع پر وفد میں اراکین اسمبلی سعید آفریدی، ریاض حیدر، ڈاکٹر عمران علی شاہ، سدرہ عمران، شہزاد قریشی، ڈاکٹر سیما ضیاء، پی ٹی آئی رہنما فراز لاکھانی، نواز مندوخیل، فضہ ذیشان، شیراز ناگانی موجود تھے،پی ٹی آئی رہنماء خرم شیرزمان نے نکاٹی ممبران کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ پی پی نے نئے بلدیاتی بل میں مقامی حکومتوں کو بے اختیار کردیا ہے، ہمیں ہر صورت پیپلز پارٹی کو روکنا ہیاگر اس قانون کے تحت بلدیاتی انتخابات ہوئے تو مزید تباہی آئے گی، اس کالے قانون کے خلاف مہم میں تمام اسٹیک ہولڈرز کو ایک پیج پر لائیں گیخرم شیر زمان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نہیں چاہتے کہ ہم 4 سال یہی کہتے رہیں کہ ہمیں کرنا کیا ہے نکاٹی ممبران کے ہمارے موقف کو سراہا ہے،کاروباری برادری شہر کے مسائل سے بخوبی واقف ہیں،شہر کے آنے والے میئر کے پاس ٹرانسپورٹ، پانی، بلڈنگ کنٹرول، صحت، تعلیم کا نظام نہیں ہوگا،ترمیمی بل کے اندر میئر چور دروازے سے سیکریٹ بیلٹ کے ذریعے آئے گاشہر کا میئر منتخب نہیں ہوگا،سندھ حکومت کی چھوٹی سوچ کی وجہ سے صوبے کا حال برا ہے،جو ڈیمانڈ ہم کررہے ہیں، وہ ہم نے اپنی صوبائی حکومتوں میں دیے ہیں دیگر صوبوں کے شہروں میں میئر با اختیار ہونگیہم نے نکاٹی کو آل اسٹیک ہولڈرز کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی ہے، سندھ میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے شہر کی بڑی بڑی سڑکیں وزیراعظم بنارہے ہیں کے سی آر وزیراعظم بنانے جارہے ہیں کووڈ کی ویکسین وزیراعظم نے دی،سندھ حکومت نے کیا کیا ہم اس کالے قانون کیخلاف یہاں آئین ہیں اس کالے قانون کے خلاف سب کو ایک ہونا ہوگا،پہلی مرتبہ اسٹیک ہولڈرز کو آن بورڈ لیا جارہا ہے دوسری جانب بلدیاتی آرڈیننس کیخلاف خرم شیر زمان کی سربراہی میں وفدآل پاکستان میمن فیڈریشن ایسوسیشن اور سربراہ پاکستان سنی تحریک ثروت اعجاز قادری سے ملاقات کیلئیپہنچا خرم شیر زمان نے رہنماؤں کو آل پاکستان اسٹیک ہولڈرز کانفرنس کی دعوت پیش کی اس موقع پر آل پاکستان میمن فیڈریشن ایسوسیشن کے صدر حنیف موٹلانی نے وفد کی آمد کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ کراچی میں نہ سڑکیں صحیح ہیں،نہ یہاں کاروبار صحیح ہے، ہم کراچی کے مسائل کے حل کی بات کرتے ہیں، مئیر پہلے بھی بیاختار تھا آئندہ بھی بیاختار ہوگا، ہم کراچی کی بہتری کیلئے آواز اٹھانے والوں کا ساتھ دیں گے، عہدے آتے اور جاتے ہیں،ہمیں جواب رب کو دینا ہے، ایم پی ایز کو ہم نے منتخب کیا، چاہتے ہیں عوامی نمائندے کام کریں،ہم بلدیاتی قانون کو پڑھیں گی ۔
ساتھ ہی ساتھ پی ٹی آئی رہنماء خرم شیرزمان نے سربراہ پاکستان سنی تحریک ثروت اعجاز قادری کو بلدیاتی ترمیمی آرڈیننس کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سنی تحریک کا کراچی میں اپنا اسٹیک و اہم کردار ہیسنی تحریک نے کراچی کے حق کیلئے شانہ بشانہ آواز بلند کی ہے، کراچی کی تمام جمہوریت پسند جماعتیں پی پی کے کالے قانون کے مخالف ہیں 12 دسمبر کو آل کراچی اسٹیک ہولڈرز کانفرنس میں پاکستان سنی تحریک کے سربراہ کی نمائندگی و ساتھ کی ضرورت ہے۔

علاوہ ازیں پی ٹی آئی رہنماء خرم شیر زمان نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ سندھ کابینہ کی فائننس کمیٹی کا اجلاس بیمعنی،صرف خانہ پوری کے کچھ نہیں، اجلاس میں اپنی اپنی کرپشن کی داستان ایک وزیر دوسرے وزیر کو سُنائیگا،بغیر اپوزیشن نمائندگان کے اہم اجلاس نہ دنیا میں کہیں دیکھینہ کہیں سنے گئے کابینہ کے اجلاس میں بات ہوگی کے کون کتنا بڑا نااہل وزیر ہے،اجلاس میں کرپشن کا نیا لائحہ عمل تیار کیا جائیگا،اپوزیشن کے کسی نمائندے کو اسٹینڈنگ کمیٹیوں کی ممبرشب نہ دینے کے پیچھے کالی سوچ ہے، اجلاس میں کیا ہی اچھا ہو اگر پینشن، زکوٰة،ڈیسکوں کی خریداری،منی لانڈرنگ و دیگر پر بات کی جائے،سندھ کو لوٹ کر کھانے والے ظالم حکمرانوں کو عوام کبھی معاف نہیں کریں گیفائننس کمیٹی کا اجلاس ڈرامیبازی اور عوام کے دلوں پر نمک پاشی کے مترادف ہیہمیں یقین ہے ان اجلاسوں میں نہ پہلے عوامی مفاد کا سوچا گیا نہ آئیندہ سوچا جائے گا ۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!