fbpx

جوہر ٹاؤن دھماکے کے ملزمان کو سزا سنا دی گئی

لاہور:جوہر ٹاؤن دھماکے کے ملزمان کو سزا سنا دی گئی ،اطلاعات کے مطابق لاہور کی انسداد دہشتگری عدالت نے جوہر ٹاؤن بم دھماکے کے مقدمے میں چار ملزمان کو 9.9 بار سزائے موت کی سزا سنا دی

انسدادی دہشدت گردی کی عدالت نے خاتون ملزمہ کو پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی

کل بھی لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن بم دھماکہ کیس کی کوٹ لکھپت جیل میں سماعت ہوئی۔ ملزمان کے وکیل اور پراسیکیوٹر نے اپنی بحث مکمل کر لی۔ انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے فیصلہ آج تک محفوظ کیا تھا جو کہ ابھی تھوڑی دیرپہلے سنا دیا گیا ،

یہ بھی یاد رہے کہ سکیورٹی خدشات کے پیش نظر کیس کی سماعت جیل میں کی گئی۔ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے ایڈمن جج ارشد حسین بھٹہ نے کیس کی سماعت کی۔ پراسیکیوٹر عبدالرئوف وٹو نے ملزمان کیخلاف شواہد پیش کئے۔

پراسیکیوشن کے 56 گواہان نے ملزمان کیخلاف شہادت قلمبند کرائی۔ پراسیکیوٹر نے اپنے دلائل میں کہا کہ سی سی ٹی وی فوٹیج، فرانزک شواہد اور گواہان کے بیانات سے ملزمان کا جرم ثابت ہوتا ہے۔ ملزمان کو سزائے موت دی جائے۔ ملزمان پیٹر پال، عید گل، عائشہ گل، ضیا اللہ اور سجاد کیخلاف سی ٹی ڈی نے مقدمہ درج کیا تھا۔ سی ٹی ڈی نے ملزمان کو جوہر ٹاؤن دھماکہ کیس میں گناہ گار قرار دے رکھا ہے۔

یاد رہے کہ پچھلے سال 23 جون 2021 کو لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن میں ہوئے دھماکہ کیا گیا تھا ،

دھماکے میں 3 افراد جاں بحق اور 20 سے زائد زخمی ہوئے تھے،

ابتدائی تحقیقات کے مطابق دھماکے میں 30 کلو گرام سے زائد غیر ملکی ساختہ دھماکا خیز مواد اور بال بیئرنگ استعمال کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق دھماکا خیز مواد کار میں نصب تھا، جسے ریموٹ کنٹرول سے اڑایا گیا، جس کے نتیجے میں کئی مکانات کو نقصان پہنچا اور کئی راہ گیر بھی زخمی ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق دھماکا شدید نوعیت کا تھا، جس کی آواز دور دور تک سنی گئی، دھماکے سے زمین میں 4 فٹ گہرا گڑھا پڑ گیا اور پانی کے پائپ پھٹ گئے، جبکہ قریبی عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے اور وہاں کھڑی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔

رپورٹ کے مطابق دھماکے سے ایک گھر زیادہ متاثر ہوا جبکہ دیگر گھروں کو بھی دھماکے سے نقصان پہنچا۔