fbpx

سندھ اور بلوچستان کو ملانے والا پل ایک بارپھر ٹریفک کیلئے بند

کراچی:صوبہ سندھ اور بلوچستان کو قومی شاہراہ کے ذریعے ملانے والا پل ایک بار پھر ٹریفک کیلئے بند کردیا گیا ہے۔

نیشنل ہائی وے اتھارٹی حکام کے مطابق ضلع لسیبلہ میں قومی شاہراہ پر واقع پل کو حب ندی سے گزرنے والے سیلابی ریلے نے شدید متاثر کیا ہے، پل کے 3 ستونوں کی حفاظتی دیواریں سیلابی ریلے میں بہہ گئی ہیں، جن کی مرمت اور حفاظتی اقدامات ہنگامی بنیادوں پر شروع کردیئے گئے ہیں۔

حکام کے مطابق پل کو حفاظتی نقطۂ نظر سے عارضی طور پر ٹریفک کی آمد و رفت کیلئے بند کردیا ہے۔

ادھرکراچی سمیت سندھ بھر میں 23 سے 26 اگست تک ایک اور طوفانی بارشوں کے اسپیل کی محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے پیش نظر چیف سیکریٹری سندھ کی زیرصدارت اہم اجلاس ہوا جس میں متوقع بارشوں کےحوالے سے انتظامات پر متعلقہ حکام نے تفصیلی بریفنگ دی جب کہ صورتحال کے پیش نظر صوبے بھر میں محکمہ صحت اور بلدیاتی کے عملے کی چھٹیاں منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

چیف سیکریٹری سندھ سہیل راجپوت نے اجلاس میں شریک افسران پر واضح کیا کہ بارش کے پانی کی نکاسی میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائیگی اور بارشوں کے دوران کمشنرز، ڈپٹی کمشنرز اپنے ہیڈ کوارٹر نہیں چھوڑیں گے۔

اجلاس کو ڈی جی پی ڈی ایم اے نے بتایا کہ سندھ میں ہفتے کے روز سے مون سون کا زوردار اسپیل شروع ہوگا جس کے دوران صوبے کے بیشترعلاقوں میں 300 ملی میٹر تک بارش متوقع ہے۔