fbpx

افغان سفارتکاروں کوواپس بلانے کا فیصلہ بدقسمتی اورافسوسناک ہے: دفترخارجہ

اسلام آباد: دفتر خارجہ کی جانب سے افغان صدر اشرف غنی کی جانب سے پاکستان میں تعینات اپنے سفیر اور تمام سفارتی عملے کو واپس بلانے کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بدقسمتی اور افسوسناک قرار دیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چودھری کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا اور حملے کے معاملے کا وزیراعظم نے خود نوٹس لیا اور ان ہی کی ہدایت پر اعلیٰ سطح پر تحقیقات کی جا رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ تحیقات کی پیروی کی جا رہی ہے۔ افغان سفیر، ان کے اہل خانہ اور پاکستان میں افغانستان کے قونصل خانے کے عملہ کی سیکیورٹی کو مزید سخت کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سکریٹری خارجہ نے آج افغانستان کے سفیر سے ملاقات کرکے حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے تمام اقدامات پر روشنی ڈالی اور انہیں مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ حکومت افغانستان اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے گی۔