fbpx

احسن اقبال کیساتھ بدتمیزی کرنے والی فیملی نے معذرت کر لی

لاہور:موٹروے پر بدتمیزی کرنے والی فیملی نے وفاقی وزیر احسن اقبال کےگھر جا کر اُن سے معذرت کر لی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال نے لکھا کہ بھیرہ واقعہ میں ملوث فیملی نے نارووال آ کر ملاقات میں اپنے عمل پر معذرت کی،پچھتاوے اور شرمندگی کا اظہار کیا۔

انہوں نے مزید لکھا کہ میں پہلے ہی ان کیخلاف قانونی چارہ جوئی نہ کرنے کا اعلان کر چکا تھا۔ ہم سب پاکستانی ہیں، ایک دوسرے سے اختلاف کے حق کو نفرت میں تبدیل نہیں کرنا اور باہمی احترام قائم رکھنا ہے۔

 

 

یاد رہے کہ پنجاب کے شہر بھیرہ میں مسلم لیگ ن کے رہنما اور وفاقی وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال کو ایک ریسٹورنٹ میں دیکھ کر وہاں موجود سابق وزیر اعظم عمران خان کے کچھ حامیوں نے لیگی رہنما کے خلاف نعرہ بازی شروع کردی۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیوز میں دیکھا گیا کہ احسن اقبال ریسٹورنٹ کے کاؤنٹر پر کھڑے ہیں،اچانک انہیں دیکھ کر بظاہر پہلے ایک خاندان کی خواتین نے ان کے خلاف چور،چور کے نعرے لگانا شروع کردیے اور بعد ازاں اس میں دیگر افراد بھی شامل ہوگئے۔

اس دوران ریسٹورنٹ میں موجود شہری ویڈیو ریکارڈ کرتے رہے۔ تاہم کچھ منٹ بعد نعرے لگانی والی خواتین اور دیگر افراد باہر چلے گئے۔
بعد ازاں احسن اقبال نے ٹوئٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے واقعے کی تفصیلات بتائیں۔