غریب کی عزت بھی گئی اوراصل مسئلہ بھی دبادیاگیا!!!۔

لاہورمیں لڑکی کےساتھ زیادتی کےمقدمےمیں پولیس نےگھرپرقبضےکاذکرہی نہ کیا۔متاثرہ لڑکی کےوالدنےگھر کاقبضہ چھڑانے کے لئےوزیراعظم پورٹل پردرخواست دےرکھی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم پورٹل پرشکایت کیوں کی؟ لاہورکےعلاقےمزنگ میں غریب کی بیٹی کوزیادتی کانشانہ بناڈالاگیا۔ پولیس نےمقدمہ درج کرتےوقت حقائق سےمنہ پھیرلیا۔گھرپرقبضےکاذکرہی نہ کیااورصرف زیادتی کا مقدمہ درج کیا۔غریب کی عزت بھی گئی اوراصل مسئلہ بھی دبادیاگیا۔

متاثرہ لڑکی کےوالدکاکہناہےکہ ملزم آدھےگھرپرقابض ہیں اورپورے قبضہ جمانے کے لئے ڈراتےدھمکاتےرہتےہیں،گھرکاقبضہ چھڑانے کے لئے وزیراعظم پورٹل پردرخواست کی تو ملزم بپھرگئے۔متاثرہ اہلخانہ درخواست میں پولیس پرملزمان کےساتھ سازبازکرنےکاالزام عائدکرچکےہیں۔

واضح رہے گزشتہ روز مزنگ کے علاقے میں 20 سالہ لڑکی کے ساتھ مبینہ اجتماعی زیادتی ہوئی، پولیس نے دو نامزد ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیاتھاجن میں ملزم احسان اور حسن شامل ہیں۔ متاثرہ لڑکی نے الزام لگایا کہ گھر والوں کی غیر موجودگی میں محلے کے لڑکوں نے زیادتی کی ، ملزمان کسی تیسرے شخص کی فون کال آنے پر فرار ہوئے۔ پولیس نے بتایا کہ معاملے کی تفتیش جاری ہے ، جلد ملزمان گرفتار ہوں گے۔

آئی جی پنجاب نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کرلی اور ملزمان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا حکم دیا۔ آئی جی پنجاب نے کہا کہ متاثرہ لڑکی کو انصاف کی فراہمی ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنائی جائے۔

یاد رہے کہ شہر میں لرزہ خیزوارداتوں کا ہونا معمول بن چکا ہے، پولیس عوامی تحفظ کے لئے موثر اقدامات کرتو رہی مگر ان میں چھپی کالی بھیڑیں ملزموں کی پست پناہی میں لگی ہیں جس کی وجہ سے معاشرے میں زیادتی، چوری، ڈکیتی، رہزانی اور جنسی ہراساں جیسے جرائم میں کمی کی بجائے مزید اضافہ ہورہا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.