مسلئہ کشمیرکو کشمیریوں کی امنگوں کی روشنی میں حل کرنا ضروری، میاں اسلم اقبال

میاں اسلم اقبال کی ڈسٹرکٹ کیمپ جیل میں یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں شرکت

یورپی معاشرے میں اگر جانور پر بھی ظلم ہوجائے تو کہرام مچ جاتا ہے، مقبوضہ وادی میں گزشتہ 7عشروں سے انسانیت کی تذلیل ہورہی ہے- میاں اسلم اقبال کا کہنا تھا کہ نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم پر عالمی برادری کی بے حسی قابل افسوس ہے، خطے میں پائیدار امن کیلئے کشمیر کے تنازع کا حل نکالنا ہوگا-صوبائی وزیر نے کیمپ جیل میں قیدی بچوں کی تعلیم و تربیت کے عمل بھی جائزہ لیا

صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے آج ڈسٹرکٹ کیمپ جیل میں یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی.آئی جی جیل خانہ جات مرزا شاہد سلیم بیگ نے کیمپ جیل آمد پر صوبائی وزیر کا استقبال کیا۔تقریب میں لوک فنکار سائیں ظہور، احمدنوازگلوکاراور دیگر فنکاروں نے ملی نغمے گا کر شرکاء کا لہو گرمایہ۔

صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت نے 5 اگست کو مقبوضہ وادی کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔قائداعظم نے کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دیا ہے اور کشمیریوں کے ساتھ ہمارا دینی اور قلبی رشتہ ہے۔پوری پاکستانی قوم آج کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کادن منارہی ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ یورپی معاشرے میں اگر کسی جانور پر ظلم ہو جائے تو کہرام مچ جاتا ہے۔مقبوضہ وادی میں گزشتہ 7عشروں سے انسانیت کی تذلیل ہو رہی ہے۔والدین کے سامنے بچوں اور بچوں کے سامنے والدین کو شہید کیا جارہا ہے۔ماؤں، بیٹیوں اور بہنوں کی عصمت دری ہو رہی ہے۔نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم پر عالمی برادری کی بیحسی قابل افسوس ہے۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ عالمی برادری اور اقوام متحدہ کو کشمیریوں پر بھارتی جبرو ستم رکوانے کیلئے اپنا کردار ادا کر نا ہوگا اور خطے میں پائیدار امن کیلئے کشمیر کے تنازعہ کوکشمیریوں کی امنگوں اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں حل کرنا ضروری ہے، انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے دنیا کے ہر فورم پر کشمیر کا مقدمہ لڑا ہے اور پاکستان کے 22 کروڑ عوام اپنے کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ قوم کے نونہالوں کو جیلوں میں دیکھ کر دلی دکھ ہوتا ہے۔جیلوں میں اصلاحات کے ذریعے انہیں جرائم کی آماجگاہ کی بجائے اصلاحی مراکز بنانا ہو گا۔قیدیوں کو مختلف فنون کی تربیت کے لئے ٹیوٹا کے ساتھ اشتراک بڑھایا جائے گا۔ آئی جی جیل خانہ جات مرزا شاہد سلیم بیگ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب بھر کی جیلوں میں اصلاحات کا عمل جاری ہے۔پنجاب کی مختلف جیلوں میں ٹیوٹا کے اشتراک 15 مختلف کورسز کرائے جارہے ہیں جبکہ 12 ہزار قیدیوں کو ٹیوٹا کے اشتراک سے فنی تر بیت فراہم کی گئی ہے۔صوبائی وزیر صنعت و تجارت نے قیدی بچوں کی تعلیم و تربیت کے مراکز کادورہ کیا اور قیدی بچوں کو دی جانے والی تعلیم و تربیت کے عمل کا جائزہ لیا۔آئی جی جیل خانہ جات مرزا شاہد سلیم بیگ،سپرنٹنڈنٹ جییل نورحسن اور دیگر پولیس افسران بھی ہمراہ تھے-
٭

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.