fbpx

خواتین کواپنی حوس کا نشانہ بنانے والا مرکزی ملزم خود نشانہ بن گیا

ایبٹ آباد:خواتین کواپنی حوس کا نشانہ بنانے والا مرکزی ملزم خود نشانہ بن گیا،اطلاعات کے مطابق ایبٹ آباد ایڈیشنل سیشن جج عارف شاہ نے لڑکی کی اپنی حوس کانشانہ بنانے اور ویڈیوز بنا کر بلیک میل کر نے والے مرکزی ملزم حماد خورشید کی عبوری ضمانت خارج کر دی تفتیشی آفیسر خورشید خان نے ملزم کو احاطہ عدالت سے ہتکڑی لگا کر تھانے منتقل کردیا،

پولیس حکام کے مطابق تھانہ بگنوتر کی حدود میں لڑکی کو اپنی حوس کا نشانہ بنانے اور ویڈیو بناکر بلیک میل کرنے والے ملزم کی عبوری ضمانت خارج کر دی مضروبہ کی پیروی معروف قانون دان اویس خان علی زئی ایڈوکیٹ نے کی متاثرہ بچے کے ورثاہ نے کورٹ کے فیصلہ کو تاریخی قرار دیا اس طرح کے فیصلوں سے انصاف کا بول بالا ہوگا

ذرائع کے مطابق قانونی ماہرین فیصلے سے جرائم کے سدباب میں مدد ملے گی اویس خان علی زئی ایڈوکیٹ ذرائع کے مطابق تھانہ بگنوتر کی حدود نملی دہرہ رہائشی بچی (ث) نے رپورٹ درج کرواتے ہو بتایا میں گورنمنٹ گرلز ہائی سکول نملی میرا میں عرصہ ڈیڑھ سال قبل نویں کلاس کی طالب علم تھی گھر سے سکول پیدل آتی جاتی تھی حماد ولد خورشید نے میری تصویر بنا کر مجھے بلیک میل کرکے ایک ویران گھر میں جا کر میرے ساتھ زبردستی زنا کاری کی اور کہا کہ اگر کسی سے بات تو تمھاری تصویر تمھارے والدین کو بھجوا دو گا

بچی کا کہنا ہے کہ وقتا فوقتاً مجھے مذکورہ حماد بلیک میل کر کے میرے ساتھ زنا کاری کرتا رہا عرصہ چھ ماہ قبل حماد مذکورہ جو کہ دانیال کا گہرا دوست وپڑوسی ہے دونوں نے مجھے بلیک میل کر کے ویران مکان میں مجھے بلایا جب میں وہاں گئی تو وہاں پر حماد مذکورہ اور اسکے ساتھ دانیال عرف دانی ولد غلام ربانی میرے پہنچتے ہی حماد نے میرے ساتھ زنا کاری شروع کر دی اور اسکے بعد دانیال نے بھی زنا کاری شروع کی دروان زنا کاری حماد نے میری ویڈیو بنا کرملزمان نے مجھے بلیک میل کر کے مجھ رقم کا مطالبہ کرتے رہے اور زنا کاری کرتے رہے جو رقم نہ ہونے کی وجہ سے میں ڈر و خوف سے سارے اپنی بہن کے زیورات دیتی رہی مزید رقم کا مطالبہ اور زنا کاری کی غرض سے بلانے پر انکاری ہونے پر ویڈیو شاہع کرنے کی دھکمی دی اور بعد ازاں ویڈیو وائرل کردی پولیس نے علت 122زیر دفعہ Ppc376.53CPA.419.420 کے تحت مقدمہ درج کر لیا تھا جبکہ ملزم حماد موقع سے فرار ہو گیا تھا

ایڈیشنل سیشن جج 1 کی عدالت سے کچھ عرصہ قبل عبوری ضمانت کروارکھی تھی گزشتہ روز مدعی مقدمہ کی طرف سے اویس خان علی ،زئی ایڈوکیٹ ٹھوس ثبوت پیش کیے عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد ریکارڈ کی روشنی میں ملزم درخواست عبوری ضمانت خارج کردیں بعدان ازاں ملزم دانیال کی درخواست ضمانت چاہیلڈ کورٹ اور ہائی کورٹ سےبھی خارج کروائی مدعی مقدمہ کی طرف سےاویس خان علی زئی خان ایڈوکیٹ بھرپور قانونی جنگ لڑی اپنے مدلل دلائل سے جنسی زیادتی کے بڑے کیس میں متاثرہ خاندان کو انصاف دلایا

قانونی ماہرین کی جانب کی جانب سے عدلیہ کے تاریخی فیصلے کو سرہا جارہا ہے قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ وقت کے ساتھ ساتھ عدلیہ کے قیام کا فیصلہ درست ثابت ہورہا ھے عدلیہ کے ثمرات آنا شروع ہوچکے ہیں اویس خان علی زئی ایڈوکیٹ نے فیصلے پر میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ماتحت عدلیہ نے جنسی زیادتی کیس میں ملزمان کو فیصلہ سناکرانصاف کے تقاضوں کو پورا کیا ھے اس طرح کے فیصلوں سے جنسی زیادتی کے جرائم میں کمی واقع ہوگی سزا کے عمل سے ہی معاشرے سے جرائم کا خاتمہ ممکن ھے متاثرہ بچے کے ورثاہ نے
عدلیہ کے فیصلے اطمينان کا اظہار کیا اور اویس خان علیزئی کی جانب سے بھرپور قانونی معاونت پر ان کا شکریہ ادا کیا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.